ادویات کی قیمتوں میں اضافہ،غریب کے لیے علاج مشکل ہوگیا

سانس کے امراض کی میڈیسن بھی مہنگی ہوگئیں

ویب ڈیسک|جمعہ11جنوری2019


لاہور: پی ٹی آئی حکومت کاغریب مریضوں کو جھٹکا،ادویات کی قیمتوں میں اضافہ کردیا جس کی وجہ سے مختلف بیماریوں میں مبتلا غریب عوام کے لیے ادویات خریدنا مشکل ہوگیا ہے۔
ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی ( ڈریپ ) نے فارماسیوٹیکل کمپنیوں کے سامنے گھٹنے ٹیک دئیے ہیں اور ڈریپ کا مطالبہ تسلیم کرتے ہوئے مختلف ادویات کی قیمتوں میں 9 سے 15 فیصد تک اضافہ کردیا ہے نوٹی فکیشن کے مطابق یہ اضافہ دوا کی پیکنگ پر تحریر کرنا ہوگا۔
قیمتوں میں اضافے کے بعد 313 روپے میں فروخت ہونے والی میڈیسن اب 369روپے کی ملے گی،سانس کے امراض کی ادویات کی قیمتیں بھی بڑھا دی گئی ہیں ۔
واضح رہے کہ دوا ساز کمپنیوں کی طرف سے گزشتہ کئی عرصے سے ادویات کی قیمتوں میں اضافے کا مطالبہ کیا جارہا تھا جس کے لیے کمپنیاں سپریم کورٹ بھی گئیں اور ادویات کی فراہمی بند کرنے کی بھی دھمکی دی تھی تاہم اب موجودہ حکومت نے طاقت ور فارماسیوٹیکل کمپنیوں کے سامنے گھٹنے ٹیک دئیے ہیں اور ان کا مطالبہ تسلیم کرتے ہوئے ادویات کی قیمتوں میں اضافہ کردیا جس کا نوٹی فکیشن بھی جاری کردیا گیا ہے۔
ادھر جان بچانے والی ادویات کی قیمتوں میں اضافہ پر عوام نے شدید ردعمل کا اظہار کرتے ہوۓ اسے عوام دشمن فیصلہ قرار دیا ہے۔شہریوں کا کہنا ہے کہ سرکاری ہسپتالوں میں پہلے ہی علاج معالجہ کی سہولیات کی کمی ہے۔ادویات تک مریضوں کو نجی میڈیکل سٹوروں سے خریدنی پڑتی ہیں۔پی ٹی آئی حکومت کے تمام دعوے جھوٹے ثابت ہورہے ہیں۔عوام کو ریلیف دینے کے بجاۓ ان کا سانس تک بند کیا جارہا ہے۔سانس کی بیماریوں کی ادویات کی قیمتوں میں اضافے سے سانس کے مریضوں کے لیے زندہ رہنا مشکل ہوجاۓ گا۔مہنگائی کے پسے غریب عوام کو سستا علاج معالجہ فراہم کرنے کے بجاۓ علاج مزید مہنگا کردیا گیا ہے۔جو غریب اپنے بچوں کو ایک وقت کی روٹی خرید کر کھلانے کی سکت نہیں رکھتا وہ بیماری کی صورت میں مہنگی ادویات کیسے خریدے گا؟حکومت فاقوں سے مرتے غریب عوام سے سانس لینے کا حق بھی چھین لینا چاہتی ہے۔ عوام نے مطالبہ کیا کہ قیمتوں میں اضافے کے بجاۓ ہر قسم کی ادویات سستی کی جائیں۔

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے