پنجاب میں بند سرکاری سکولوں کی بحالی کا فیصلہ

بند سکول چلانے کے لیے ریٹائرڈ اساتذہ کی خدمات لی جائیں گی

ویب ڈیسک|11جنوری2019

لاہور: پنجاب بھر میں بند اور غیرفعال سرکاری سکولوں کی بحالی کا فیصلہ کرلیا گیا ہے ۔ بند سکولوں کی بحالی پر 5کروڑ روپے خرچ کیے جائیں گے۔اس حوالے سے معلوم ہوا ہے کہ پنجاب ٹیچرز فاؤنڈیشن نے صوبے بھر میں موجود بند سرکاری سکولوں کی بحالی کا بیڑہ اٹھایا ہے جس کے لیے ریٹائرڈ سرکاری اساتذہ کی خدمات حاصل کی جائیں گی۔
1985ء سے قائم پنجاب ٹیچرز فاونڈیشن اپنے قیام سے لے کر اب تک کوئی نمایاں خدمات انجام نہیں دے سکی تھی  تاہم اب پنجاب ٹیچرز فاؤنڈیشن بند سکولوں کی بحالی پر 5 کروڑ کی خطیر رقم خرچ کرے گی۔ پنجاب ٹیچرز فاؤنڈیشن نے گریڈ 16 اور17کے ریٹائرڈ اساتذہ کی بھرتی کیلئے محکمہ سکول ایجوکیشن سے تفصیلات مانگ لی ہیں۔ٹیچرز فاؤنڈیشن سکولوں کی بحالی کے ساتھ اساتذہ اور طلباء کے حقوق کا تحفظ بھی کرے گی۔ ریٹائرڈ اساتذہ اضلاع، تحصیل اور یونین کونسل کی سطح پر کام کریں گے۔ فاونڈیشن نے تمام اتھارٹیز کو ریٹائرڈ اساتذہ کی تفصیلات فراہم کرنے کیلئے مراسلہ جاری کردیا ہے۔
اس حوالے سے ایم ڈی پنجاب ٹیچرز فاؤنڈیشن بشریٰ ناہید نے سکول ایجوکیشن سے صرف اُن اساتذہ کی تفصیلات مانگی ہیں جن کو ریٹائرڈہوئے 5 سال کاعرصہ ہوا ہے اور ان کے پاس ہائی اور ہائر سکینڈری سکول میں پڑھانے کا تجربہ بھی ہے۔واضح رہے کہ پنجاب بھر میں کئی سکول اساتذہ اور دیگر سہولیات نہ ہونے سے بند پڑے ہیں اور مقامی افراد نے سکولوں کی عمارتوں میں مال مویشی باندھ رکھے ہیں۔ایسے سکولوں کو بحال کرکے یہاں تدریسی عمل شروع کیا جاۓ گا جس سے شرح خواندگی میں اضافہ ہوگا۔

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے