مختلف شہروں میں بارش سے سردی میں مزید اضافہ

،کراچی میں سڑکیں تالاب بن گئیں،لاہور میں گرج چمک کے ساتھ موسلادھار بارش

رپورٹنگ ڈیسک |21 جنوری ، 2019

لاہور ،گوجرانوالہ،فیصل آباد،سرگودھا،رحیم یارخان ،صادق آباد،کراچی، حیدرآباد، میرپورخاص سمیت ملک کے مختلف شہروں میں بارش سے سردی کی شدت میں اضافہ ہوگیا ہے، لاہور میں رات سے گرج چمک کے ساتھ موسلادھار بارش کا سلسلہ جاری ہے۔جس کی وجہ سے گلی محلوں اور سڑکوں پر پانی جمع ہوگیا ہے ۔
محکمہ موسمیات کے مطابق ملک کے مختلف شہروں میں کہیں ہلکی اور کہیں تیز بارش کے بعد موسم مزید سرد ہوگیاہے جب کہ بلوچستان کے بالائی علاقوں میں بارش اور برفباری کا سلسلہ تھم گیاہے۔
لاہور اور کراچی میں گزشتہ رات وقفے وقفے سے بارش کا سلسلہ جاری رہا۔ بارش کے بعد کراچی کی مرکزی شاہراہیں ندی نالوں کا منظر پیش کرنے لگیں۔
گوجرانوالہ، سرگودھا، وہاڑی، بورے والا، میلسی ،رحیم یار خان،صادق آباد اور گرد و نواح میں گزشتہ رات سے بارش کا سلسلہ وقفے وقفے سے جاری ہے۔
بلوچستان کے بالائی پہاڑی اور میدانی علاقے برفیلی ہواؤں کی لپیٹ میں آگئے، وادی زیارت، کان مہترزئی اور توبہ اچکزئی میں درجہ حرارت نقطہ انجماد سے نیچے گرگیا۔
محکمہ موسمیات کے مطابق زیارت میں کم سے کم درجہ حرارت منفی 11 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا جب کہ وادی کوئٹہ میں درجہ حرارت منفی 2 اعشاریہ 5، قلات میں منفی 3، دالبندین میں منفی ایک، ژوب میں 2، پنجگور 3، سبی 4، اور گوادر میں 13 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا۔
ملکی بالائی علاقوں میں برفباری کا سلسلہ جاری ہے، کالام اور مالم جبہ میں وقفے وقفے سے برفباری جاری ہے، میاندم اور مرغزار کے پہاڑوں پر بھی برفباری ہورہی ہے، شدید ترین برفباری سے کالام اتروڑ روڈ ٹریفک کے لیے بند کردیا گیا۔
ضلع غذر میں تین روز سے برفباری ہورہی ہے جس کے بعد باعث بالائی علاقوں کے زمینی رابطے بھی بدستور بند ہیں اور کئی دیہات میں خوراک، ادویات اور اشیائے خرد و نوش کی قلت پیدا ہوگئی۔جنوبی وزیرستان کے بالائی علاقوں میں بھی برف باری کا سلسلہ جاری ہے۔
محکمہ موسمیات کے مطابق پیر سے بدھ تک مالاکنڈ، ہزارہ ڈویژن میں درمیانی سے شدید بارش کا امکان ہے اور آج پشاور، مردان، راولپنڈی، گوجرانولہ، لاہور ڈویژن، سرگودھا، فیصل آباد، بہاولپور، ملتان، ساہیوال، میرپور خاص اور ٹھٹہ ڈویژن میں چند مقامات پر بارش کا امکان ہے۔
محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ مری، گلیات، گلگت بلتستان اور کشمیر میں درمیانی سے شدید برفباری کا امکان ہے اور برفباری سے برفانی تودے گرنے کا خدشہ ہے۔ 29 اور 30 جنوری کو ایک اور بارش کا سسٹم ملک میں داخل ہونے کا امکان
محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ رواں سال سسٹم ملک کے 90 فیصد علاقوں میں بارش اور برفباری لے کر آیا اور برف باری آئندہ آنے والے دنوں میں ڈیمز میں پانی کی کمی نہیں ہونے دے گی۔
محکمہ موسمیات کے بارش برسانے والا سسٹم شام تک سندھ سے نکل جائے گا اور 29 اور 30 جنوری کو ایک اور بارش کا سسٹم ملک میں داخل ہونے کا امکان ہے۔
محکمہ موسمیات کے مطابق بارش نے فضا میں موجود آلودگی کم کردی، گندم کی کاشت کے دنوں میں بارش کا ہونا خوش آئند ہے۔ادھر لاہور اور بالائی پنجاب کے مختلف شہروں میں گرج چمک کے ساتھ بارش کا سلسلہ جاری ہے۔سردی بڑھنے سے شہری گھروں میں دبک کر رہ گئے ہیں۔کئی علاقے میں بجلی اور گیس غائب ہونے سے شہریوں کو مشکلات کا سامنا ہے۔لاہور کی سڑکوں پر پانی جمع ہوچکا ہے جبکہ راوی کنارے جھگیوں میں آباد خانہ بدوش خاندان بارش سے شدید متاثر ہوۓ ہیں۔جنوبی پنجاب کی آخری تحصیل صادق آباد میں رات کو ہونے والی موسلادھار بارش سے نشیبی علاقے پانی میں ڈوب گئے جبکہ ریلوے انڈر برج بھی پانی سے بھر گیا۔ٹی ایم اے کا عملہ انڈر برج سے پانی نکالنے میں مصروف ہے۔بازاروں میں صفائی کے ناقص انتظامات کے باعث بارشی پانی سے کیچڑ پیدا ہوگیا ہے جس کی وجہ سے راہگیروں اور دکانداروں کو آمدورفت میں دشواری کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔نہری پانی کی کمی کا شکار علاقوں کے کاشتکاروں نے بارش کو گندم کی فصل کے لیے مفید قرار دیا ہے۔چولستان میں بھی بارش سے روہیلے خوش ہیں۔

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے