افغانستان میں فوجی اڈے پر حملہ،126اہلکار ہلاک

جوابی کارروائی میں 3حملہ آور بھی مارے گئے

ویب ڈیسک| پیر 21جنوری2019

کابل: افغانستان کے فوجی ٹریننگ سینٹر میں خود کش حملے میں 126 اہلکار ہلاک اور متعدد زخمی ہو گئے جب کہ جوابی کارروائی میں 3 حملہ آور بھی مارے گئے اور ایک نے خود کو دھماکے سے اُڑا لیا۔
بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق مشرقی صوبہ وردک میں افغان خفیہ ایجنسی کے ٹریننگ سینٹر پر طالبان جنگجوؤں نے حملہ کرکے 126 اہلکاروں کو ہلاک کردیا، جوابی کارروائی میں 3 حملہ آوربھی مارے گئے جب کہ چوتھے حملہ آور نے دھماکا خیز مواد سے بھری گاڑی مرکزی دروازے سے ٹکرادی۔
بارود سے بھری گاڑی مرکزی دروازے سے ٹکرانے کے بعد حملہ آور فائرنگ کرتے ہوئے اندر داخل ہوئے، گھمسان کی لڑائی میں 126 افغان اہلکار ہلاک ہوگئے جب کہ متعدد زخمی ہیں۔ ہلاک اور زخمی ہونے والوں کو قریبی اسپتال منتقل کردیا گیا جب کہ کچھ زخمیوں کو کابل لے جایا گیا ہے۔
افغان فوج کے ترجمان نے دعویٰ کیا ہے کہ جوابی کارروائی میں 3 طالبان جنگجوؤں کو مار دیا گیا جب کہ ایک نے بارودی کار دھماکے سے اُڑا دی۔ حملہ آوروں کی تعداد کا تعین نہیں کیا جا سکا۔
افغان طالبان نے فوجی بیس پر خود کش حملے کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے کہا کہ حملہ آور گروپ نے فوجی بیس میں گھس کر افغان فوجیوں کو نشانہ بنایا۔
یہ حالیہ حملے ایک ایسے موقع پر کیے گئے ہیں جب 17سال سے جاری اس جنگ کے خاتمے کے لیے امریکا اور طالبان کے درمیان مذاکرات کا سلسلہ جاری ہے اور امریکی نمائندہ برائے امن زلمے خلیل زاد گزشتہ ماہ طالبان کے نمائندوں سے ملاقات کے بعد خطے کے دیگر ملکوں کے رہنماؤں سے ملاقات کی۔
ان کا یہ دورہ اتوار 20 جنوری کو پاکستان آمد کے ساتھ اختتام پذیر ہوا جہاں زلمے خلیل زاد نے جنگ کے خاتمے کے لیے وزیر اعظم عمران خان سے ملاقات کی تھی۔

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے