نواز شریف کی زندگی کو خطرہ ہے،ذاتی معالج

نوازشریف کے تھیلم سکین ٹیسٹ کی رپورٹ سامنے آگئی

لاہور (قافلہ نیوز)نواز شریف کے ذاتی معالج نے کہا ہے کہ اگر سابق وزیراعظم کو طبی سہولیات نہ دی گئیں توان کی صحت اور زندگی کو خطرہ لاحق ہو سکتا ہے۔
سابق وزیراعظم نواز شریف کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان نے ٹویٹر پر نواز شریف کی میڈیکل رپورٹ شائع کی، جس میں انہوں نے کہا کہ علامہ اقبال میڈیکل کالج بورڈ نےنواز شریف کو ہسپتال منتقل کرنے کی تائید کی، بورڈ نے واضح کہا کہ اگر ان کو طبی سہولیات نہ دیں گئیں تو صحت اورزندگی کو خطرہ لاحق ہو سکتا ہے۔
میڈیکل بورڈ نے 17جنوری کوطبی معائنہ کیا اور 22جنوری کو رپورٹ جاری کی، بورڈ نے ان کو فورا ہسپتال منتقل کرنے کی تائید کی تاکہ بروقت ان کی بیماری کو کنٹرول کیاجاسکے۔

Dr. Adnan Khan
@Dr_Khan
The proceeds of Medical Board constituted at Allama Iqbal Medical College/Jinnah Hospital in respect of former PM #NawazSharif signed on 17JAN19 were provided on 22JAN19.
Board recommends that Mr. Sharif would benefit from hospitalization, which was denied risking health & life!

221
12:14 PM – Jan 23, 2019
164 people are talking about this
Twitter Ads info and privacy

قبل ازیں کوٹ لکھپت جیل میں قید سابق وزیراعظم میاں محمد نواز شریف کو طبعیت خراب ہونے پر پنجاب انسٹیٹوٹ آف کارڈیالوجی منتقل کیا گیا،جہاں ڈاکٹرز نے نواز شریف کا ایکو کارڈیو گرافی، ای سی جی اور بلڈ ٹیسٹ کیے ہیں،ڈاکٹرز کا کہنا تھاکہ ایکو کی رپورٹ میں نواز شریف کے دل کا سائز معمول سے بڑا پایا گیا جبکہ دل کے پٹھے موٹے ہو گئے ہیں۔
تھیلیم سکین کے بعد نواز شریف کو ہسپتال میں داخل کرنے یا واپس بھجوانے کا فیصلہ ہوگا۔ یادرہے کہ چند روز قبل نواز شریف کے جیل میں بھی بلڈٹیسٹ ہوئے تھے۔
تازہ ترین اطلاعات کے مطابق سابق وزیراعظم نوازشریف کے پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی میں کئے گئے تھیلم سکین ٹیسٹ کی رپورٹ سامنے آگئی ہے جس میں ان کے دل کی ایک شریان میں معمول سے زیادہ تنگی کے اثرات ظاہر ہورہے ہیں۔پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی میں گزشتہ روزطبی معائنے کے دوران نوازشریف کا تھیلم سکین ٹیسٹ بھی کیا گیا تھا، جس میں نواز شریف کے دل کی ایک شریان میں معمول سے زیادہ تنگ ہونے کے اثرات ظاہرہورہے ہیں، شریان میں رکاوٹ کے باعث دل کے نچلے حصے کو خون کی فراہمی متاثر ہے۔ ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ دل کی شریان میں رکاوٹ پرانی بھی ہوسکتی ہے۔ مرض کی حتمی تشخیص کے لئے نوازشریف کی اینجیو گرافی کی ضرورت بھی پیش آسکتی ہے۔
نوازشریف کی ای سی جی اورایکوکارڈیوگرافی رپورٹ بھی غیرتسلی بخش تھی، جن کی رپورٹس کے مطابق نوازشریف کے دل کے پٹھے سخت اوروال بھی معمول سے تنگ ہیں۔
واضح رہے کہ گزشتہ روزپنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی میں نوازشریف کے تھیلم اسکین ٹیسٹ اورایکو کارڈیاگرافی ٹیسٹ کئے گئے تھے، نوازشریف کے ذاتی معالج ڈاکٹرعدنان نے مطالبہ کیا ہے کہ نوازشریف کی صحت ایسی ہے کہ انہیں ہسپتال منتقل کیا جائے تاکہ ماہرڈاکٹرزکی زیرنگرانی ان کا علاج ہوسکے۔

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے