پنجاب حکومت کا بسنت نہ منانے کا اعلان

صوبائی وزیر اطلاعات نے بسنت منانے کا عندیہ دیا تھا

بسنت نہ منانے کا اصولی فیصلہ کرلیا:سینئر وزیر پنجاب


لاہور(قافلہ نیوز)پنجاب حکومت نے 12سال بعد لاہوریوں کو بسنت کا عندیہ دینے کی بعد عوامی تنقید پر بلا آخر بسنت نہ منانے کا اصولی فیصلہ کر لیا ہے، اس حوالے سے کل عدالت میں تفصیلی جواب جمع کرایا جائے گا۔ پنجاب کے سینئر وزیر عبداالعلیم خان نے اس حوالے سے بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ ادارے اپنی ذمہ داریاں پوری کریں تو ایسے تہوار منائے جا سکتے ہیں۔
ذرائع کے مطابق سینئر وزیر عبدالعلیم خان کے زیر صدارت اجلاس میں پنجاب حکومت نے بسنت نہ منانے کا فیصلہ کیا ہے۔ کل عدالت میں حکومت کی طرف سے تفصیلی جواب جمع کرایا جائیگا۔سینئر وزیر عبدالعلیم خان کا کہنا تھا کہ محفوظ بسنت کی تیاری کیلئے 4 سے 6 ماہ کی ورکنگ درکار ہے۔ ادارے ذمہ داریاں پوری کریں تو ایسی سرگرمیاں ہو سکتی ہیں۔
ان کا کہنا تھا کہ ڈور اور پتنگ کی تیاری رجسٹرڈ ہونی چاہیے اور باقاعدہ نظام وضع ہونا چاہیے، اس کے علاوہ دھاتی ڈور کے استعمال اور قوانین کی خلاف ورزی پر ایکشن ہونا چاہیے۔ انہوں نے واضح کہا کہ بسنت نہ منانے کا فیصلہ عوامی مفاد میں کر رہے ہیں۔واضح رہے کہ پنجاب کے وزیر اطلاعات و ثقافت نے گذشتہ بسنت منانے کا عندیہ دیا تھا جس کے بعد سے بسنت کے حمایت اور مخالفت میں ایک نئی بحث چھڑ گئی تھی۔پنجاب میں 12سال پہلے دھاتی ڈور سے گلے کٹنے اور ہلاکتوں کے باعث بسنت اور پتنگ بازی پر پابندی عائد کردی گئی تھی۔

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے