ممتاز اداکارہ روحی بانو انتقال کر گئیں

وہ ترکی کے ہسپتال میں زیر علاج تھیں

لاہور(قافلہ نیوز)پی ٹی وی کے سنہری دور کی ممتاز اداکارہ روحی بانو آج ترکی کے ایک ہسپتال میں انتقال کر گئیں ۔ گردے فیل ہونے کے باعث گزشتہ 10 دن سے وہ استنبول کے ایک ہسپتال میں وینٹی لیٹر پر تھیں۔ ان کی عمر 67 برس تھی ۔ وہ چند سالوں سے نفسیاتی عوارض کا بھی شکار تھیں۔ و ہ 10 اگست 1951 کو پیدا ہوئیں۔پی ٹی وی کے یادگار ڈراموں میں بے مثال اداکاری کی۔
اداکارہ کی بہن روبینہ یاسمین کے مطابق روحی بانو استنبول کے ایک ہسپتال میں زیر علاج اور گذشتہ 10 روز سے وینٹی لیٹر پر تھیں، رات گئے ان کی طبیعت اچانک بگڑ گئی اور وہ دنیائے فانی سے کوچ کر گئیں۔
انہوں نے بتایا کہ روحی بانو گردوں کے عارضے میں مبتلا اور طویل عرصے سے نفسیاتی مرض شیزوفرینیا کا شکار تھیں۔
روحی بانو 10 اگست 1951 کو کراچی میں پیدا ہوئیں۔ وہ اعلیٰ تعلیم یافتہ تھیں اور بے ساختہ اور قدرتی اداکاری روحی بانو کا خاصہ تھی۔
انہوں نے کئی مشہور ڈراموں میں اداکاری کے جوہر دکھائے، جن میں کرن کہانی، زرد گلاب، دروازہ اور اشتباہ نظر شامل ہیں، روحی بانو کو صدارتی تمغہ برائے حُسن کارکردگی سے بھی نوازا گیا۔
روحی بانو نے اپنی زندگی کے آخری ایام میں بہت سی تکلیفیں جھیلیں۔ ازواجی زندگی میں بے سکونی کے ساتھ ساتھ اکلوتے بیٹے علی کے قتل کے بعد سے گویا زندگی کی تمام رعنائیاں اُن سے چھِن گئیں اور لاہور میں واقع نفسیاتی اسپتال ‘فاؤنٹین ہاؤس’ ان کا مسکن بن گیا۔
لاہور کے علاقے گلبرگ تھری میں روحی بانو کا اپنا گھر بھی ہے، جو اب کھنڈر میں تبدیل ہو چکا ہے۔
گذشتہ برس نومبر میں روحی بانو کے لاپتہ ہونے کی بھی رپورٹس سامنے آئی تھیں، تاہم ان کی بہن نے سابق اداکارہ کے لاپتہ ہونے کی خبروں کی تردید کرتے ہوئے بتایا تھا کہ وہ اہلخانہ کے ساتھ ہیں۔
دوسری جانب روحی بانوں کے انتقال پر فنکار برادری نے اظہارِ افسوس کیا اور ان کی خدمات کو خراج عقیدت پیش کیا ہے۔
معروف شاعر امجد اسلام امجد، اداکار عابد علی، توقیر ناصر اور غلام محی الدین نے کہا روحی بانو ایک بڑی اداکارہ تھیں، ان کا انتقال ٹی وی ڈرامے کے لیے ناقابل تلافی نقصان ہے۔

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے