تحریک آزادی جموں وکشمیر جھنگ کے زیر اہتمام کل جماعتی کانفرنس

کشمیریوں کی ہر سطح پر حمایت ہمارا دینی اور اخلاقی فرض ہے:مقررین

جھنگ(قافلہ نیوز)کشمیر ہماری شہہ رگ ہے اور شہہ رگ کے بغیر آزادی کا سوچنا جاہلیت ہے۔ کشمیر کے ساتھ ہمارا رشتہ انسانیت ، اسلامیت اور پاکستانیت کا ہے۔ کشمیر کی آزادی تک ہم تن ، من اور دھن سے جد و جہد جاری رکھیں گے۔ ان خیالات کا اظہار تحریک آزادی جموں وکشمیر جھنگ کی جانب سے منعقد کردہ کل جماعتی کانفرنس میں تمام سیاسی جماعتوں کے نمائندوں نے کیا۔ کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ملی مسلم لیگ کے ضلعی صدر حکیم سیف الرحمٰن نے کہا کہ نبی آخرالزماں کا فرمان ہمارے لئے مکرم ہے۔ سب مسلمان ایک جزو ہیں اور کشمیری بھائیوں پر ہونے والے مظالم ہمارے ضمیر پر گولیوں کی طرح برستے ہیں ۔ کشمیر ہماری شہہ رگ ہے جس کے بغیر ہماری آزادی نا مکمل ہے۔ہمیں مذہبی ، لسانی اور گروہی اختلافات میں الجھا کر دشمن ہماری قوت کو کمزور کر رہا ہے ۔مضبوط اور مستحکم پاکستان ہی کشمیری بھائیوں کیلئے مضبوط آواز بن سکتا ہے۔

جماعت اسلامی کے ضلعی امیر بہادر جھگڑ نے خطاب کرتے ہوئے بھارتی ظلم و جبر ، اور اس کے دوہرے رویے سے پردہ اٹھاتے ہوئے کہا کہ کشمیری مسلمانوں کے ساتھ دوہرا کھیل کھیلا جا رہا ہے۔ آزادی کیلئے جد و جہد کرنے والے مجاہدین کو عالمی دنیا میں شدت پسند بتا کر ان کو شہید کیا جا رہا ہے۔ جس کے خلاف نہ صرف آواز اٹھانا بلکہ ان کے شانہ بشانہ کھڑا ہونا ہمارا اخلاقی ، سفارتی ،انسانی اور قومی فرض ہے ۔ چئیر مین تحریک آزادی جموں و کشمیر ضلع جھنگ ابوالقاسم نے اپنے خطاب میں کہا کہ کشمیریوں سے ہمارا رشتہ انسانیت، اسلامیت اور پاکستانیت کا ہے ۔ جب وہاں کوئی شہید ہوتا ہے تو اسے پاکستانی جھنڈے کا کفن دے کر دفنایا جاتا ہے، عالمی دنیا کشمیر کے معاملے پر جو خاموش تماشائی بنی تھی اب وہ بھی بول پڑی ہے کہ کشمیر میں واقعی نہتے معصوموں پر ظلم و جبر کی داستاں رقم کی جا رہی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ کامل ایمان یہی ہے کہ ہم آزادی تک کشمیر بھائیوں کا تن ، من اور دھن سے ساتھ دیں ۔ کل جماعتی کانفرنس میں شمولیت کرنے والے دیگر سیاسی ، سماجی ، مذہبی اور صحافتی طبقوں نے بھی بھرپور اظہار ہمدردی کیا اور پانچ فروری کو کشمیری بھائیوں کے ساتھ یوم یکجہتی منانے اور عالمی دنیا کو اپنا مؤقف پہنچانے کیلئے ریلی کے انعقاد پر اتفاق کیا گیا ۔

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے