جواریوں اور شرابیوں کی طرف داری قابل مذمت ہے:پی ٹی آئی صادق آباد

چئیرمین صاحب!شہر کا برا حال ہے،اس پر بھی ہنگامی اجلاس بلاکر کچھ سوچیں:وقاص بسرا


صادق آباد (قافلہ نیوز)پاکستان تحریک انصاف صادق آباد کے صدر وقاص اعظم بسرا ، جنرل سیکرٹری زاہد ندیم ، سابق تحصیل صدر راؤ عطاء الرحمن،شاہد امیر شاہد اور دیگر کارکنان نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے تحصیل میونسپل کمیٹی کی طرف سے ہنگامی اجلاس بلا کر ایک جواری کو سپورٹ کرنے پر شدید تنقید کی ہے۔وقاص عظیم بسرا اور زاہد ندیم کا کہنا ہے کہ چئیرمین صاحب! شہر کا برا حال ہوچکا ہے۔گلیوں میں گٹر ابل رہے ہیں۔گندگی اور سیوریج کے پانی سے شہری تنگ ہیں۔ان عوامی مسائل کے بارے میں بھی کبھی سوچیں۔
انہوں نے کہا کہ عوام کی خدمت اور شہری مسائل کے حل کے نام پر ووٹ لے کر منتخب ہونے والے بلدیاتی نمائندؤں اور چئیرمین تحصیل میونسپل کمیٹی نے ایک جواری اور منشیات گینگ کے سرغنہ کی حمایت میں تحصیل میونسپل کمیٹی کا ہنگامی اجلاس بلا کر اپنے حلف کی خلاف ورزی کی ہے جس کی ہم شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہیں۔شہریوں کو اولڈ صادق آباد میں کئی گھرانوں کو کنگال بنانے والے جواء مافیا کے خلاف کارروائی پر اے ایس پی کو سپورٹ کرنا چائیے۔انہوں نے کہا کہ صادق آباد کے نواحی چک میں معصوم بچے کو کتوں نے نوچ نوچ کر مار ڈالا تب کسی کو اس حوالے سے ہاؤس کا ہنگامی اجلاس بلانے کا خیال کیوں نہیں آیا؟شہر میں صفائی اور سیوریج کا نظام انتہائی ابتر ہوچکا ہے،ہر گلی محلے میں گٹر ابل رہے ہیں۔تجاوزات کی بھر مار ہے لیکن کبھی شہر کے سلگتے مسائل پر تحصیل میونسپل کمیٹی کا ہنگامی اجلاس نہیں ہوا۔لیکن شرابی کونسلر اور جواء گینگ کے سرغنہ کو بچانے کے لیے تو فوری ہنگامی اجلاس بلا لیا جاتا ہے۔

یہ خبر بھی پڑھیں: صادق آباد:کونسلر کے بیٹے کی گرفتاری کے خلاف تحصیل میونسپل کمیٹی کا ہنگامی اجلاس

وقاص بسرا نے کہا کہ بہت افسوس کی بات ہے کہ اب تک تحصیل میونسپل کمیٹی کے دو ہنگامی اجلاس ہوۓ ہیں جس میں پہلا ہنگامی اجلاس گزشتہ سال 8یا 9مارچ کو ایک شرابی کو بچانے کے لیے بلایا گیا اور دوسرا ہنگامی اجلاس کل 7فروری کو ہوا اور یہ اجلاس بھی عوام کے مسائل پر بات کرنے کے لیے نہیں بلکہ جواء سرغنہ کے بچانے کے لیے بلایا گیا۔ان دواجلاسوں پر جو پیسہ خرچ کیا گیا وہ غریب لوگوں کی جمع پونجی میں سے اکھٹے کیے گئے ٹیکسوں کا پیسہ تھا جسے عوام اور شہر کے مفاد کے بجاۓ جواری اور شرابی کو بچانے پر لگادیا گیا۔کیا اس کا کوئی جواب دہ ہے؟وقاص بسرا نے چئیرمین چودھری شفیق پپاء کو مخاطب کرتے ہوۓ کہا کہ چئیرمین صاحب ایک شرابی اور جواری پکڑا جاۓ توان کو بچانے کے لیے تو سب اکھٹے ہوجاتے ہیں۔آپ شہر کے بارے میں بھی سوچیں۔عوام کو درپیش مسائل کا خیال کریں۔گلیوں میں گٹر ابل رہے ہیں۔تجاوزات،قبضہ مافیا کا خاتمہ کریں۔شہر کو گندگی سے نجات دلائیں۔آپ کے کونسلر کی شہر میں شہرت کیسی ہے سب جانتے ہیں۔صادق آباد میں جواء گینگ نے خاندان کے خاندان برباد کردئیے ہیں۔پولیس نے اب اگر ان کے خلاف ٹھوس ایکشن لیا ہے تو جواری گینگ کو بچانے کے لیے سب اکھٹے ہوگئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ پولیس کلچر بدل رہا ہے۔اے ایس پی حفیظ بگٹی نے جرائم پیشہ اور سماج دشمن عناصر پر ہاتھ ڈالا ہے تو ہمیں ایک ایماندار اور فرض شناس پولیس افسر کا ساتھ دینا چاہیے۔لیکن افسوس ہے صادق آباد کے ایک بزرگ ن لیگی سیاست دان شرابی اور منشیات فروشوں کی وکالت میں کھڑے ہوجاتے ہیں۔ہم انہیں کہتے ہیں کہ وہ مسجد میں بیٹھ کر گواہی دے دیں کہ پولیس نے جس کونسلر کے بیٹے کو منشیات فروشی پر گرفتار کیا ہے وہ جواری اور منشیات فروش نہیں ہے۔اگر وہ جواریوں کا سرغنہ ہے ۔منشیات فروش ہے تو وہ بزرگ سیاست دان ہمارا ساتھ دیں اور اے ایس پی کا شکریہ ادا کریں کہ انہوں نے ہماری نسلوں کو تباہی سے بچایا ہے۔اگر کوئی افسر اچھا کام کرے تو اس کی تعریف کرنی چاہیے۔صادق آباد شہر میں نوگوایریا کسی بھی شہری کو قبول نہیں۔شاہد امیر شاہد نے ن لیگ کے ایک بزرگ کونسلر کی طرف سے سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو میں تحریک انصاف کے خلاف غلط زبان استعمال کرنے کی شدید مذمت کرتے ہوۓ کہا کہ ہم بھی منہ میں زبان رکھتے ہیں۔ہماری خاموشی کو کمزوری نہ سمجھا جاۓ۔بزرگ سیاست دان کو آئندہ تحریک انصاف کے خلاف بولنے سے قبل الفاظ کا چناؤ کرتے ہوۓ ضرور سوچنا چاہیے۔انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی ہو یا کوئی اور سیاسی جماعت کسی بھی پارٹی کا کارکن اگر کوئی غلط کام کرتا ہے تو اس کی حمایت کرنے کے بجاۓ اس کو قانون کے مطابق سزا دلوانے کے سب کو کردار ادا کرنا چاہیے۔اگر پی ٹی آئی کا کوئی کارکن غلط اور مکروہ کام کرتا ہے تو آپ اس کو بے نقاب کریں ہم خود اس کو سزا دلوائیں گے۔لہذا معاشرے میں غلط کام کرنے والوں کو سیاسی تحفظ اور سپورٹ نہیں ملنی چاہیے۔اے ایس پی حفیظ الرحمن بگٹی انتہائی ایماندار اور فرض شناس پولیس افسر ہیں۔انہوں نے ہماری نسلوں کو تباہی سے بچانے کے لیے جواء اور منشیات فروش مافیا پر ہاتھ ڈالا ہے۔تھانوں میں چٹی دلالوں کا داخلہ بند کردیاہے۔ایک سرکاری افسر کو اس کا کام کرنے دیں۔انہوں نے اگر کسی کو پکڑا ہے تو یقینا ٹھوس شواہد پر ہی پکڑا ہوگا۔انویسٹی گیشن میں سب سامنے آجاۓ گا۔ہماری کسی سے دشمنی نہیں لیکن غلط کام کی حمایت نہیں کرنی چاہیے۔وقاص اعظم بسر کا کہنا تھا کہ ہماری پارٹی ملک کے اداروں کا احترام کرتی ہے اور ہم اے ایس پی ڈاکٹر حفیظ الرحمٰن بگٹی کے ساتھ کھڑے ہیں۔جس کسی پر بھی کسی منفی سرگرمی میں ملوث ہونے کا الزام ہے وہ چاہے ہماری پارٹی سے ہی کیوں نہ ہو ہم اس کا دفاع نہیں کریں گے۔

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے