زکوٰۃ گزارہ الاؤنس کی فوری تقسیم کیلئے ڈپٹی کمشنرز کو اختیارات دینے کا فیصلہ

صوبے کے 30 مزاروں میں عطیات کی وصولی کیلئے کیش مشینیں نصب کی جائیں گی

لاہور(ویب ڈیسک،20فروری 2019) وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کی زیر صدارت وزیراعلیٰ آفس میں 3گھنٹے طویل اجلاس ہوا ۔ اجلاس میں سماجی بہبود کے شعبوں کی سہ ماہی کارکردگی کاجائزہ لیا گیا ۔ متعلقہ وزرا اور سیکرٹریز نے وزیراعلیٰ کو تفصیلی بریفنگ دی ۔اجلاس میں کم آمدن والے لوگوں کی مشکلات کے سدباب کیلئے زکوٰۃ گزارہ الاؤنس کی فوری تقسیم یقینی بنانے کیلئے ڈی سی کو اختیار دینے کا فیصلہ کیا گیا،جس کے تحت ڈپٹی کمشنراپنے متعلقہ اضلاع میں ڈسٹرکٹ زکوٰۃ کمیٹی کے ایڈمنسٹریٹر کی اضافی ذمہ داریاں سر انجام دیں گے ۔اجلاس میں وضو کے پانی کو دوبارہ استعمال میں لانے کیلئے داتا دربار میں پائلٹ پراجیکٹ شروع کرنے کافیصلہ کیا گیااور بریفنگ کے دوران بتایا گیاکہ صوبے کے 30 مزاروں میں عطیات کی وصولی کیلئے پائلٹ پراجیکٹ کے طو رپر کیش مشینیں نصب کی جائیں گی،جس کے ذریعے زائرین او رعقیدت مند کیش باکس کے بجائے مشین میں عطیات جمع کراسکیں گے ۔سیکرٹری اوقاف نے بتایاکہ محکمہ اوقاف ویب سائٹ کے ذریعے بیرون ملک مقیم افراد کیلئے آن لائن لنگر کی تقسیم اور مزاروں کی آن لائن ویڈیو شیئرنگ کا منصوبہ شروع کر رہاہے ۔محکمہ انسانی حقوق و اقلیتی امور کی بریفنگ کے دوران محکمے کی کارکردگی کے بارے میں بریفنگ دی گئی ۔ مینارٹی ایمپاور منٹ پیکیج کیلئے 10رکنی کمیٹی تشکیل دی گئی ، منسٹر اقلیتی امور کمیٹی کے چیئرمین ہونگے ۔ اقلیتوں کیلئے سرکاری تعلیمی اداروں میں داخلے کا کوٹہ مخصوص کرنے کی تجویزپر غور کیا گیا۔چائلڈ پروٹیکشن اتھارٹی سے متعلق بریفنگ کے دوران چائلڈ پروٹیکشن بیورو کے ہونہار طلبہ کو دانش سکول میں داخل کرانے کی تجویزپیش کی گئی۔وزیراعلیٰ نے اس موقع پر تجویز سے اتفاق کرتے ہوئے کہا کہ 18سال کے بعد چائلڈ پروٹیکشن بیورو سے فارغ التحصیل بچوں کیلئے فیوچر پلاننگ کی جائے ۔اجلاس میں مزید بتایا گیاکہ لاہور میں 5پناہ گاہوں کی عمارتوں کی تعمیر کا عمل جلد مکمل ہو جائے گا۔وزیراعلیٰ نے کہا چین کی طرز پر شیلٹر ہوم یا پناہ گاہ کیلئے بنے بنائے گھروں کے ماڈل پر بھی کام کیا جائے ۔ محکمہ سوشل ویلفیئر کی بریفنگ کے دوران بتایا گیا کہ لاہور میں خواجہ سراؤں کی فلاح و بہبود کیلئے کمیونٹی ویلفیئر سنٹر قائم کیا جائے گا، جس میں خواجہ سراؤں کو فنی تعلیم ، میڈیکل ، قانونی مشاورت ، لائبریری او ردیگر سہولتیں فراہم کی جائیں گی ، اضلاع میں دارالامان کو اپ گریڈ کر کے وی اے ڈبلیو سی مراکز بنانے اورویمن ہاسٹل ریگولیٹری اتھارٹی کے قیام کی تجویز پر غور کیا گیا۔
وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کی زیرصدارت وزیراعلیٰ آفس میں منعقدہ اجلاس میں صوبے کے مالیاتی امور اور سالانہ ترقیاتی پروگرام پر پیش رفت کا جائزہ لیا گیا۔ وزیراعلیٰ نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے سرکاری محکموں کو بچت پالیسی پر سختی سے عملدرآمد کی ہدایت کی اور کہا کہ مالیاتی امور میں شفافیت کو ہر قیمت پر یقینی بنایا جائے ۔ انکا کہنا تھا ہم قوم کے وسائل کے امین ہیں اور عوام کے خون پسینے کی کمائی پر کسی کو ڈاکہ ڈالنے کی اجازت نہیں دینگے ۔ وزیراعلیٰ پنجاب سے وزیراعلیٰ آفس میں ترکی کے سفیر اصحان مصطفی یرداکول نے ملاقات کی۔ترک سفیر نے مختلف شعبوں میں پنجاب حکومت کیساتھ ہر ممکن تعاون کی یقین دہانی کرائی ،ملاقات میں ہاؤسنگ،سیاحت،تعلیم،صحت اورووکیشنل تربیت کے شعبوں میں تعاون کو مزید فروغ دینے پر اتفاق کیا گیا۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے اس موقع پر گفتگوکرتے ہوئے کہا پاکستان اور ترکی یکجان دو قالب ہیں، وقت آ گیا ہے کہ دونوں ملکوں کے تجارتی حجم میں مزید اضافہ کیا جائے ۔انہوں نے کہا ترک سرمایہ کار آگے آئیں اور ان مواقع سے فائدہ اٹھائیں، انہیں ہر طرح کی سہولتیں دیں گے ، نئے پاکستان میں ترک سرمایہ کا روں کو کاروبار کیلئے آسانیاں فراہم کریں گے ۔ترک سفیر اصحان مصطفی یرداکول کا کہنا تھا ترک کمپنیوں نے پنجاب میں مختلف شعبوں میں سرمایہ کاری کی ۔ مزید ترک کمپنیاں بھی پاکستان خصوصاً پنجاب میں سرمایہ کاری کرنا چاہتی ہیں۔وزیر اعلیٰ پنجاب کی زیر صدارت دانش سکول اتھارٹی کااجلاس ہوا ،جس میں دانش سکول اتھارٹی کی کارکردگی کے علاوہ متعلقہ امور کا جائزہ لیا گیا۔ وزیراعلیٰ نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا پنجاب کے ہر بچے کو اعلیٰ ترین تعلیم کے مواقع فراہم کرنا چاہتے ہیں۔ دانش سکول اورسنٹرآف ایکسی لینس کے پراجیکٹ میں بہتری لائیں گے اور دانش سکول کے اخراجات میں کمی کیلئے ضروری انتظامی تبدیلیاں کی جائیں گی۔ وزیراعلیٰ نے کہا دانش سکولوں کی تعمیر میں گھپلے کرنیوالوں سے قومی خزانے کی پائی پائی وصول کرینگے ۔انہوں نے ہدایت کی کہ دانش سکول میں چھٹی جماعت کے بجائے آٹھویں کلاس سے بچے داخل کرنے کی تجویز کا جائزہ لیا جائے ۔

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے