کچہ کے دریائی علاقے میں موبائل پر لڑکیوں کی آواز نکال کر لوگوں کو اغوا کرنے کا نیٹ ورک قائم،اہم سہولت کار گرفتار

  • رپورٹنگ ڈیسک | جمعرات 21فروری 2019

صادق آباد: موبائل فون پر دل جلوں کو لڑکیوں کی آواز نکال کر اپنے چنگل میں پھنسا کر اغواء کرنے والے گینگ کا سہولت کار پولیس کے ہتھے چڑھ گیا۔ اس حوالے سے اے ایس پی صادق آباد ڈاکٹر حفیظ الرحمن بگٹی نے پریس کانفرنس میں میڈیا نمائندگان کو تفصیلات سے آگاہ کرتے ہوۓ بتایا کہ تھانہ ماچھکہ پولیس کو اطلاع ملی تھی کہ موبائل فون پر لڑکیوں کی آواز میں جھانسہ دے کر ملاقات کے بہانے سے مختلف افراد کو مرید شاخ بلایا جاتا ہے جہاں سے گینگ کا اہم رکن ظہران سولنگی جوکہ ماچھکہ کا رہائشی ہے آنے والے افراد کو موٹر سائیکل پر بٹھا کر کچہ میں ملزمان کے پاس پہنچاتا ہے جس پر پولیس نے اس کی ریکی کی اور ایک شخص کو کچہ میں لے جاتے ہوئے روکا تو پتا چلا کہ سانگھڑ کے رہائشی ریاض گجر کو کچہ کے ڈاکوؤں نے لڑکی کی آواز میں ٹریپ کرکے بلایا ہے اور اب ظہران سولنگی اس کو کچہ میں پہنچانے جار ہا ہے جس پر پولیس نے ملزم کو حراست میں لے لیا اور مغوی کو بازیاب کرلیا ۔ملزم ظہران سولنگی نے انکشاف کیا ہے کہ ڈاکو اسے فی آدمی ایک ہزار روپیہ دیتے ہیں۔ اے ایس پی حفیظ بگٹی نے مزید بتایا کہ ملزمان انو ولد گڈو شر اور یسین ولد جنگل لڑکیوں کی آواز نکال کر شہریوں کو کچہ میں بلاکر اغوا کرکے تاوان وصول کرتے ہیں اور گرفتار ملزم اغوا کاروں کا سہولت کار ہے جو مغویوں کو ان تک پہنچاتا ہے ۔ملزم کے خلاف مقدمہ درج کرلیا گیا ہے جس سے تفتیش جاری ہے۔اہم انکشافات متوقع ہیں۔

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے