بھارتی ایئر چیف مارشل پاکستان کے خلاف سرجیکل اسٹرائیک کے ثبوت دینے میں ناکام

بھارتی فضائی فوج کے ایئر چیف مارشل بی ایس دھانوا چھ روز بعد منظرعام پر آگئے

ویب ڈیسک : 04 مارچ 2019

نئی دلی: بھارتی ایئر چیف مارشل بی ایس دھنوا لڑکھڑاتی زبان کے ساتھ پاکستان کے خلاف سرجیکل اسٹرائیک کے ثبوت دینے میں ناکام رہے۔
بھارتی ایئر چیف مارشل بی ایس دھانوا ایک ہفتے بعد اپنی میڈیا کا سامنا کرنے کے لیے تیار ہوسکے، تاہم وہ ایک ہفتے میں بھی کسی قسم کے شواہد اکھٹا کرنے میں ناکام رہے اور صحافیوں کے سوال پر آئیں بائیں شائیں کرنے لگے۔
نیوز بریفنگ کے دوران بھارتی ائیر چیف پاکستان میں فضائی حملے میں ہلاکتوں کے ثبوت اور مصدقہ تفصیلات بتانے میں ناکام رہے اور ’ہم ہدف کو نشانہ بناتے ہیں، ہلاکتوں کی درست تعداد بتانا ہمارا کام نہیں‘ کے جملے میں اپنی سبکی چھپانے کی ناکام کوشش کرتے رہے۔
دوسری جانب بھارتی ایئرچیف اور 6 روز قبل سیکریٹری خارجہ وجے گھوکلے کے بیان میں تضاد بھی سامنے آگیا، ایئر چیف جن اعداد وشمار کو پیش کرنے سے گریزاں نظر آئے سیکریٹری خارجہ وہ بھڑکیں پہلے ہی مار چکے ہیں اور میڈیا کو امید تھی کہ ایئر چیف اپنے وزیر خارجہ کی بھڑک کو ٹھوس اعداد وشمار سے سہارا دیں گے۔
پاکستان کی جانب سے رہا کیے گئے گرفتار بھارتی پائلٹ ابھی نندن کے حوالے سے پوچھے گئے سوال کے جواب میں بھارتی ایئر چیف نے اپنے ونگ کمانڈر پر زیر لب عدم اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ابھی نندن کے دوبارہ لڑاکا طیارہ اُڑانے کا انحصار اس کی فٹنس پر ہے۔پریس کانفرنس کے دوران انہوں نے کہا ہے کہ ابھی نندن فی الحال جہاز چلانے کیلئے فٹ نہیں، پائلٹ کے مستقبل کا فیصلہ میڈیکل رپورٹ کے بعد ہوگا وہ میڈیکل چیک اپ کے بعد واپس ڈیوٹی پرآئیں گے۔
بھارتی ایئرچیف میڈیا کوشواہد فراہم کرنےمیں ناکام رہے اور جانی نقصان سے متعلق اعداد وشماربھی نہیں دے سکے۔
انہوں نے مزید کہا کہ ہم ہلاکتیں نہیں گنتے، ہم دیکھتے ہیں کہ مطلوبہ ہدف کو نشانہ بنایا یا نہیں۔ بھارتی ایئر چیف کا کہنا تھا کہ ہماری فضائیہ حملے میں ہلاکتوں کی وضاحت دینے کی پوزیشن میں نہیں ہے، ہلاکتوں کی تعداد بتانا حکومت کا کام ہے۔
پریس کانفرنس کے دوران لڑاکا طیارے مگ 21 کی صلاحیت سے متعلق سوالات پر بھارتی فضائیہ کے چیف نے کہا کہ مگ 21 قابل صلاحیت لڑاکا طیارہ ہے جسے اپ گریڈ کیا گیا ہے اس میں عمدہ راڈار سسٹم اور فضا سے فضا میں ہدف کے نشانہ بنانے کی صلاحیت ہے۔
یادرہے کہ 26 فروری 2019 کوپاک فضائیہ کی بروقت جوابی کارروائی نے لائن آف کنٹرول کی خلاف ورزی کرنے والے بھارتی طیاروں کو بھاگنے پر مجبور کردیا تھا۔
بھارتی طیاروں نے جلد بازی میں واپس جاتے ہوئے جنگل میں اپنا پے لوڈ آف کیا تھا جس سے درجنوں درخت جل گئے تھے۔
بھارتی حکومت نے دعویٰ کیا تھا کہ کالعدم تنظیم جیش محمد کے ٹریننگ کیمپ کو نشانہ بنایا گیا ہے جس میں 300 کے قریب دہشت گرد مارے گئے ہیں لیکن بھارتی حکام تاحال جانی نقصان کے شواہد دینے میں ناکام ہیں۔

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے