افتخار مجاز لاہور کی ادبی فضا کو سوگوار کرگئے

ادبی رپورٹر| بدھ03مارچ2019

لاہور: معروف شاعر،کالم نگار اور پی ٹی وی نیوز کے سابق کنٹرولر کرنٹ افیئر افتخار مجاز منگل کی رات شیخ زاید ہسپتال لاہور میں انتقال کرگئے۔
صحافی اور استاد زابر سعید بدر کے مطابق افتخار مجاز کی بیماری کا آغاز کئی ماہ پہلے ہوا جب 3 اکتوبر 2018 کی صبح افتخار مجاز کی طبیعت ناساز ہوئی انہیں ولنشیا میں ڈاکٹر جاوید سبزواری کے کلینک لے جایا گیا جہاں ان کا تقریبا دو ہفتے علاج ہوا اسی دوران ان کی حالت مزید بگڑ گئی تو انہیں شیخ زید ہسپتال داخل کروا دیا گیا جہاں تقریبا دو ہفتے علاج کے بعد ان کی حالت اس حد تک تک سنبھل گئی کہ ان کو گھر منتقل کر دیا گیا۔گزشتہ تین چار ماہ سے وہ اپنے گھر پر ہی زیر علاج تھے اور باقاعدگی سے ہر شام کو فزیوتھراپی کے لیے نورکلینک جایا کرتے۔اللہ کی رحمت سے انہوں نے کبھی بھی مایوسی کا اظہار نہیں کیا بیماری کے دوران جب بھی ان سے ملاقات ہوئی وہ اللہ تعالی کی رحمت سے ہمیشہ پرامید رہے ۔چند روز قبل یونیورسٹی سے واپسی پر ان سے ملاقات ہوئی تو وہ ذرا سا بھی مایوس نہیں لگ رہے تھے ان کی زبان میں لکنت بھی نہ رہی تھی اور وہ سہارا لے کے خود سے چل رہے تھے لیکن جمعہ کو اچانک ان کی طبیعت خراب ہوئی رات گیارہ بجے انہیں شیخ زید ایمرجنسی میں داخل کروا دیا گیا ان کی ایک صاحبزادی ملک سے باہر تھیں وہ ہفتے کو جب واپس آئیں تو افتخار مجاز صاحب نے ان کو نہ صرف پہچانا بلکہ مختصر سی گفتگو بھی کی لیکن (اتوار) کو دوپہر کے وقت ان کی بلیڈنگ شروع ہو گئی جس کے بعد انہیں فوری طور پر وینٹی لیٹر پر شفٹ کر دیا گیاجہاں وہ منگل کی رات اپنے خالق حقیقی سے جا ملے۔افتخار مجاز کی رحلت کی خبر نے لاہور کی ادبی اور صحافتی فضا کو سوگوار کردیا ہے۔

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے