کیپٹن ریٹائرڈ عارف نواز دوسری بار آئی جی پنجاب تعینات

ویب ڈیسک : پیر 15اپریل 2019
لاہور: پنجاب میں سول بیوروکریسی میں اکھاڑ پچھاڑ کے بعد آئی پنجاب کو بھی تبدیل کردیا ہے
صوبائی حکومت نے کیپٹن ریٹائرڈ عارف نواز کو نیا آئی جی پنجاب تعینات کرتے ہوئے امجد جاوید سلیمی کو سٹیبلشمنٹ ڈویژن رپورٹ کرنے کا حکم جاری کر دیا ہے۔
خیال رہے کہ صوبے کی اعلیٰ بیوروکریسی میں اکھاڑ پچھاڑ کے بعد آئی جی پنجاب امجد جاوید سلیمی کی بھی تبدیلی کا امکان ظاہر کیا جا رہا تھا۔ آئی جی پنجاب کے لئے سابق آئی جی عارف نواز خان، اے ڈی خواجہ اور ڈی جی اینٹی کرپشن اعجاز حسین شاہ کو فیورٹ امیدوار قرار دیا جا رہا تھا تاہم یہ قرعہ کیپٹن ریٹائرڈ عارف نواز کے نام نکلا۔
خیال رہے کہ اس سے قبل تحریک انصاف حکومت محمد طاہر خان کو بھی بطور آئی جی آزما چکی ہے جبکہ پنجاب پولیس ریفارمز کمیشن کے سربراہ ناصر خان درانی سیاسی مداخلت پر پہلے ہی مستعفی ہو چکے ہیں۔
امجد جاوید سلیمی کا تعلق پولیس کے 14ویں کامن سے ہے۔ انہوں نے یکم نومبر 1986ء کو بطور اے ایس پی پولیس سروس جوائن کی تھی۔ وہ 7 فروری 2013ء کو سی سی پی او لاہور تعینات ہوئے تھے۔
کیپٹن ریٹائرڈ عارف نواز 1961ء میں راولپنڈی میں پیدا ہوئے۔ عارف نواز کا تعلق 14ویں کامن سے ہے جو کیرئیر کے ابتدا میں بطور ایس ڈی پی او لودھراں، پاکپتن اور فیروز والہ شیخوپورہ میں فرائض سرانجام دیتے رہے۔
1992ء میں عارف نواز خان نے ایس پی کے عہدہ پر ترقی حاصل کی۔ 2000ء میں ایس ایس پی جبکہ 2009ء میں ڈی آئی جی کے عہدہ پر ترقی حاصل کی۔
عارف نواز خان نے 2014ء میں ایڈیشنل آئی جی کے عہدہ پر ترقی پائی۔ اس دوران بہاولپور، فیصل آباد، سپیشل برانچ، وی وی آئی پی سیکیورٹی، ڈی آئی جی ٹریننگ پنجاب، بلوچستان اور سنٹرل پولیس آفس لاہور میں اہم عہدوں پر فائز رہے۔ عارف نواز خان عام انتخابات 2018ء کے دوران بھی آئی جی پنجاب کے طور پر خدمات سرانجام دے چکے ہیں۔

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے