محکمہ اسکول ایجوکیشن کو فنڈز کی شدید کمی کا سامنا

ویب ڈیسک : 17مئی 2019
لاہور: پنجاب کے محکمہ اسکول ایجوکیشن کو فنڈز کی شدید کمی کا سامنا ہے، ریٹائرڈ اساتذہ کو کئی سالوں سے پنشن نہ ملنے کا بھی انکشاف ہوا ہے۔ اسکولوں میں اضافی کلاس رومز کی تعیمر کیلئے برطانوی این جی او سے مدد لینے کا فیصلہ کیا گیاہے۔
محکمہ اسکول ایجو کیشن پنجاب کے ایک مراسلے نے انتطامی اور معاشی بحران کا پول کھول دیا ہے ۔ اساتذہ اور دیگر عملے کے گریجویٹی ، پنشن اور لیو اینکیشمنٹ کے متعدد کیسز زیر التوا ہیں۔اسکول ایجوکیشن پنجاب کے مراسلے میں انکشاف ہوا ہے کہ متعدد ریٹائرڈ اساتذہ کو چار سالوں سے پنشن ہی نہیں ملی اور نہ ہی کئی ٹیچرز اور نان ٹیچنگ اسٹاف کو الاؤنسز کی ادائیگیاں کی جا سکی ہیں۔
محکمے کی جانب سے زیر التواء کیسز کی فہرست طلب کر لی گئی ہے جبکہ سی ای اوز کو سابق اور موجودہ اسٹاف کو بقایا جات کی ہدایت کر دی گئی ہے۔فنڈز نہ ہونے پر سرکاری اسکولوں میں اضافی کمرے بنانے کا منصوبہ بھی شروع نہیں کیا جا سکا۔ اب کمرے بنانے کے لئے برطانوی تنظیم ڈیپارٹمنٹ آف انٹرنیشنل ڈویلپمنٹ کی مدد لینے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔
پنجاب کے بارہ اضلاع کے اسکولوں میں کلاس رومز کی تعمیر کے لئے دو ہزار بیس کی ڈیڈ لائن رکھی گئی ہے۔ ہر ڈسٹرکٹ کے 80 اسکولوں میں کمرے بنانے کا پلان مرتب کیا گیاہے ۔اس حوالے سے معلوم ہوا ہے کہ برطانوی ادارے کے تعاون سے صوبہ بھر کے 960 سکولوں میں ایڈیشنل کلاس رومز بنائے جائیں گے ، ایڈیشنل کلاس رومز صرف ان سکولوں میں بنیں گے جہاں کمروں کی کمی ہوگی، اضافی کمرے مارچ 2020 تک مکمل کرلیے جائیں گے۔پروگرام مانیٹرنگ اینڈ امپلمنٹیشن یونٹ نے ایڈیشنل کلاس رومز تعمیر کرنے کیلئے اتھارٹیز سے تفصیلات مانگ لی ہیں۔ پی ایم آئی یو نے اتھارٹیز کو سکولوں کی فہرست 23 مئی تک فراہم کرنے کی ہدایت کی ہے۔ ایڈیشنل کلاس رومز صرف ان سکولوں میں بنائے جائیں گے جہاں کمروں کی کمی ہوگی، رومز کی تعمیر مارچ 2020 تک مکمل کر لی جائے گی۔
دوسری جانب پنجاب بھر کے 78 فیصد سرکاری سکولوں میں طلباء کی آن لائن حاضری کا آغاز نہ ہوسکا، لاہور کے 98 فیصد سرکاری سکولوں میں اب بھی طلباء کی حاضری رجسٹر پر لگائی جاتی ہے۔سرکاری سکولوں میں ٹیب کی کمی کے باعث طلباء کی آن لائن حاضری کا آغاز نہ ہوسکا، ذرائع کا کہنا ہے کہ پنجاب بھر کے 48 ہزار سکولوں میں سے صرف 22 فیصد سکولوں میں ہی آن لائن حاضری کا عمل شروع کیا جاسکا ہے۔ پنجاب کے 78 جبکہ لاہور کے 98 فیصد سکولوں میں ابھی بھی حاضری رجسٹر پر لگائی جارہی ہے، سکول سربراہان کا کہنا ہے کہ طلباء کی حاضری لگانے کے بعد بذریعہ ایس ایم ایس حاضری بھیجوائی جارہی ہے۔ سکول ایجوکیشن کا کہنا ہے کہ آن لائن حاضری لگانے کیلئے تمام سکولوں کو ٹیب فراہم کیے جارہے ہیں۔ آن لائن حاضری لگانے کیلئے سکول ایجوکیشن کو مزید وقت درکار ہوگا۔

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے