وزیراعظم اچانک سرگودھا پہنچ گئے،ہسپتالوں،تھانوں کادورہ،انتظامہ لاعلم

ویب ڈیسک| 25 مئی 2019
اسلام آباد،سرگودھا،خوشاب: وزیر اعظم عمران خان نے مقامی سطح پر فراہم کی جانے والی تمام سہولتوں کی براہ راست نگرانی کا فیصلہ کرتے ہوئے مختلف سرکاری ہسپتالوں اور تھانے کا دورہ کیا۔
تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم عمران خان نے مقامی سطح پر فراہم کی جانے والی سہولتوں کی براہ راست نگرانی کا فیصلہ کیا ہے اس سلسلہ میں وزیر اعظم ملک بھر میں کہیں بھی اچانک دورے کریں گے۔ اس دوران وہ ہسپتالوں، سکولوں، تھانوں، پناہ گاہوں اور مختلف منصوبوں کا جائزہ لیں گے۔
وزیر اعظم عمران خان مختلف شہروں میں جائیں گے اور عوام سے ملیں گے جبکہ وہ عوام کو فراہم کی جانے والی سہولتوں کا بھی جائزہ لیں گے۔
اس حوالے سے وزیر اعظم عمران خان نے آج پہلا دورہ سرگودھا کے ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال کا کیا جہاں وہ بغیر پروٹوکول پہنچے۔ وزیر اعظم کو دیکھ کر ہسپتال میں موجود لوگ حیران ہوگئے اور ان کے لیے نعرے بھی لگائے۔
اپنے اچانک دورے کے دوران وزیر اعظم نے مریضوں کی تیمار داری کی اور ہسپتال میں سہولتوں کا جائزہ لیا۔ انہوں نے براہ راست مریضوں سے سہولتوں سے متعلق پوچھا جبکہ مریضوں سے علاج و معالجے کا بھی دریافت کیا۔وزیراعظم کو اچانک اپنے سامنے دیکھ کر کئی مریض موبائل کیمرے سے ان کی ویڈیو بھی بناتے رہے۔لوگوں نے وزیر اعظم کے اچانک دورے پر ان کا شکریہ ادا کیا۔
اس کے بعد وزیر اعظم ڈی ایچ کیو ہسپتال خوشاب پہنچے، یہاں بھی انہوں نے اسپتال کا معائنہ کیا اور مریضوں سے سہولتوں سے متعلق پوچھا۔
وزیر اعظم نے ہسپتال کے ایم ایس سے پوچھا کہ یہ ہسپتال نیا لگ رہا ہے کب کھلا؟ جس پر ایم ایس نے بتایا کہ یہ ہسپتال 3 ماہ پہلے کھلا، 125 بیڈ پر مشتمل ہے تاہم اوور لوڈنگ کی وجہ سے 200 بیڈز تک انتظام کردیا کردیا گیا۔
وزیر اعظم نے بچوں کے وارڈز کا بھی دورہ کیا جہاں نرس نے بچوں کے وارڈز میں سہولتوں کی عدم دستیابی کی شکایت کردی۔ نرس کا کہنا تھا کہ ہمیں 3 سے 4 بچے ایک بیڈ پر لانا پڑتے ہیں۔ اوور لوڈنگ کے باعث مریضوں کو انتظار کرنا پڑتا ہے۔
وزیر اعظم نے مشیر برائے قومی صحت کو فوری طور پر سہولتیں فراہم کرنے کی ہدایت کردی۔ انہوں نے مختلف وارڈز میں جا کر مریضوں کی عیادت بھی کی۔

وزیر اعظم کا تھانے کا دورہ

ہسپتالوں کے بعد وزیر اعظم عمران خان تلہ گنگ تھانے پہنچ گئے جہاں انہوں نے پولیس افسران کی حاضری کا ریکارڈ طلب کر لیا۔انہوں نے لاک اپ میں قید افراد سے متعلق بھی دریافت کیا۔ وزیر اعظم نے تھانے میں بند قیدیوں سے گفتگو کرتے ہوئے پوچھا کہ کیا مسئلہ ہے کس جرم میں لایا گیا؟ ایس ایچ او نے بتایا کہ ڈکیتی کے کیس میں لایا گیا، آج ہی ریمانڈ لیا گیا۔
وزیر اعظم نے تھانے میں بند گاڑیوں اور موٹر سائیکلوں کا جائزہ لیتے ہوئے دریافت کیا کہ تھانے میں اتنی گاڑیاں کیوں کھڑی ہیں؟ انہوں نے ایف آئی آر کے اندراج سے متعلق تھانے کا ریکارڈ بھی چیک کیا۔
وزیر اعظم کے اچانک دوروں سے انتظامیہ اور افسران بھی لاعلم رہے۔
خیال رہے کہ گزشتہ روز وزیر اعظم نے کراچی کا دورہ کیا تھا، ایک روزہ دورے کے دوران انہوں نے گورنر ہاؤس میں کراچی کے ترقیاتی منصوبوں سے متعلق اجلاس کی صدرات کی تھی۔وزیراعظم نے شوکت خانم ہسپتال کی فنڈ ریزنگ افطار ڈنر میں بھی شرکت کی تھی جہاں شوکت خانم ہسپتال کے لیے 24 کروڑ روپے چندہ جمع ہوا۔

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے