ورلڈ کپ کی رنگارنگ افتتاحی تقریب

پاکستانی کپتان سرفراز قومی لباس شلوار قمیص میں ملبوس تھے

ویب ڈیسک | بدھ 29مئی 2019

لندن : بکنگھم پیلس میں کرکٹ ورلڈ کپ 2019 کی افتتاحی تقریب منعقد ہوئی جہاں شائقین کی بڑی تعداد موجود تھی اور عالمی نوبیل انعام یافتہ پاکستانی طالبہ ملالہ یوسف زئی نے کرکٹ 60 سیکنڈز چیلنج میچ میں اظہر علی کے ہمراہ پاکستان کی نمائندگی کی۔
افتتاحی تقریب کو ‘اوپننگ پارٹی’ کا نام دیا گیا تھا جس کے باقاعدہ آغاز سے قبل ویسٹ انڈیز کے عظیم بلے باز سر ویوین رچرڈز نے کہا کہ ویسٹ انڈیز کو ہرانا آسان نہیں ہے۔انہوں نے ورلڈ کپ کی مضبوط امیدوار ٹیموں کا نام لیتے ہوئے کہا کہ بھارت اور پاکستان کے علاوہ میزبان انگلینڈ بھی بڑی ٹیم ہے جو ٹورنامنٹ جیتنے کی اہلیت رکھتی ہے۔
پاکستان کی جانب سے اظہر علی اور ملالہ یوسف زئی نے 60 سیکنڈز میں 38 رنز بنائے جبکہ ویسٹ انڈیز نے سر ویوین رچرڈز کی قیادت میں 47 رنز بنائے، بھارت کی جانب سے انیل کمبلے اور بولی ووڈ اسٹار فرحان اختر نے نمائندگی کی اور 19 رنز بنائے۔
سری لنکا کی جانب سے مہیلا جے وردھنے اور بنگلہ دیش کی نمائندگی عبدالرزاق کے ہمراہ خاتون اداکارہ نے کی، آسٹریلیا نے بریٹ لی کی قیادت میں 69 رنز بنائے، جیمز فرینکلن نے نیوزی لینڈ کے لیے 32 رنز بنائے، کیلس نے جنوبی افریقہ کے لیے 48 رنز بنائے اور انگلینڈ نے کیون پیٹرسن کی قیادت میں 74 رنز بنائے۔
انگلینڈ نے 60 سیکنڈز چیلنج میچ میں آسٹریلیا کو پیچھے چھوڑتے ہوئے کامیابی حاصل کی۔
قبل ازیں ورلڈ کپ میں حصہ لینے والی تمام ٹیموں کے کپتانوں نے ملکہ ایلزبتھ سے ملاقات کی۔

ورلڈ کپ کی افتتاحی تقریب کے دوران دفاعی چمپیئن آسٹریلیا کے سابق کپتان مائیکل کلارک کی ورلڈ کپ کی ٹرافی اٹھائے اسٹیج پر پہنچے اور ٹرافی کو سجا دیا جس کے بعد ورلڈ کپ کا آفیشل گانا بھی گایا گیا۔
ورلڈ کپ کی رنگارنگ افتتاحی تقریب لندن مال میں ہوئی جس میں کرکٹ کو رقص اور موسیقی کا بھرپور تڑکا لگایا گیا۔انگلینڈ میں شیڈول ورلڈ کپ کو رقص و موسیقی کا تڑکا لگایا گیا، نامور کرکٹرز کی موجودگی میں انٹرٹینمنٹ سے شائقین کرکٹ لطف اندوز ہوئے، ایک گھنٹے پر محیط تقریب کو پوری دنیا میں برطانیہ کے معیاری وقت کے مطابق 5 بجے شام سے براہ راست نشر کیا گیا۔
ورلڈ کپ کی سرپرائز تقریب کی ٹکٹیں پہلے ہی فروخت ہوچکی تھیں اور قرعہ اندازی کے ذریعے 4 ہزار شائقین کو ایونٹ میں شریک کا پروانہ جاری کیا گیا تھا، ٹکٹ کسی دوسرے کو فروخت نہیں کیے جاسکتے تھے بلکہ جس کے نام پر جاری ہوئے وہی انہیں استعمال کرسکتا تھا۔
دوسری جانب انگلینڈ میں جمعرات سے شیڈول کرکٹ ورلڈ کپ کی سیکیورٹی کیلیے غیرمعمولی اقدامات کیے گئے ہیں، حالیہ کچھ ماہ میں کرکٹ کھیلنے والے 2بڑے ممالک نیوزی لینڈ اور سری لنکا میں ہونے والے دہشتگردی کے واقعات نے میگا ایونٹ کے منتظمین کو سیکیورٹی پلان پر نظر ثانی پر مجبور کیا اور اس میں مزید بہتری بھی لائی گئی ہے، دنیا کی مجموعی صورتحال کے پیش نظر دہشتگردی کے خطرے کو مکمل طور پر رد نہیں کیا جا سکتا، اس لیے آئی سی سی کی ٹیم مکمل طور پر چوکس ہے۔ورلڈ کپ سیکیورٹی ٹیم کی سربراہ جل میک کریکین نے ایک بار پھر یقین دہانی کرائی کہ وہ اور ان کی پوری ٹیم تاریخ کے سب سے چیلنجنگ ورلڈ کپ کو محفوظ ترین بنانے کیلیے تیار ہے۔ انھوں نے کہا کہ ہم نے مجموعی صورتحال کو مدنظر رکھتے ہوئے غیرمعمولی اقدامات کیے ہیں، ہم اپنے سیکیورٹی پلان کے بارے میں تمام کرکٹ بورڈز کو خطوط لکھ چکے، اس کے باوجود ضرورت پڑنے پر ردوبدل بھی کرسکتے ہیں۔ ٹیمیں اپنے ساتھ سیکیورٹی ایڈوائزرز بھی لائی ہیں اور وہ سب انتظامات کے حوالے سے کافی مطمئن ہیں۔انہوں نے دعویٰ کیا کہ 16 جون کو اولڈ ٹریفورڈ میں شیڈول پاک بھارت میچ کو بھی کسی قسم کا کوئی خطرہ لاحق نہیں ہے، ہم مسلسل انٹیلی جینس یونٹس کے ساتھ رابطے میں ہیں، ہم نے مختلف کمیونٹیز کے درمیان کسی قسم کے تناؤ کے بھی کوئی آثار نہیں۔جل میک کریکین نے کہاکہ یہ ایک کرکٹ کا ایونٹ ہے اور ہم چاہتے ہیں کہ صرف کھیل کے حوالے سے ہی یاد رکھا جائے۔

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے