پنجاب کے بجٹ میں نیا کیا ہوگا؟

بجٹ میں پہلی بار جنوبی پنجاب کی ترقی کے لیے خطیر رقم رکھی گئی ہے

ویب ڈیسک | جمعرات13جون2019
لاہور: پنجاب حکومت 21 کھرب 61 ارب روپے کا بجٹ کل پیش کرے گی۔
محکمہ خزانہ پنجاب کی سرکاری دستاویزات کے مطابق بجٹ کا کل حجم تقریبا 21 کھرب 61 ارب روپے تجویز کیا جا رہا ہے جس میں ترقیاتی بجٹ کا حجم 346 ارب روپے ہو گا اور غیر ترقیاتی بجٹ کا حجم 1310 ارب روپے تجویز کیا جا رہا ہے۔ٹیکس کی مد میں شہریوں سے محکموں کے ذریعے 105 ارب روپے بڑھا کر 3 کھرب 68 ارب وصول کرنے کے اہداف مقرر کرنے کی تجویز ہے۔ وزیراعلیٰ آفس سمیت دیگر سرکاری محکموں کے غیر ترقیاتی بجٹ میں کٹ لگانے کی تجویز بھی دی گئی ہے۔
سرکاری دستاویز کے مطابق پنجاب کو این ایف سی کے تحت قابل تقسیم محاصل کی مد میں 1494 ارب روپے ملیں گے جبکہ صوبائی آمدنی کا حجم 368 ارب روپے ہو گا۔ پنجاب کے کچھ ترقیاتی سکیموں میں 27 ارب روپے کی غیر ملکی فنڈنگ بھی شامل ہوگی۔
پنجاب کے بجٹ میں ڈیرہ غازیخان سمیت جنوبی پنجاب کے اضلاع میں ترقیاتی کاموں پر زیادہ فوکس رکھا جا رہا ہے جبکہ تنخواہوں اور پنشن سے متعلق وفاقی حکومت کے فیصلے کے مطابق ہی پنجاب میں تجویز دی جائے گی، پنجاب میں نئی گاڑیوں کی خریداری کے لئے بھی بجٹ مختص کیا جا رہا ہے۔
پنجاب کے سرکاری ہسپتالوں اور سکولوں میں حالات بہتر بنانے اور نئے ہسپتال بنانے سے متعلق بھی منصوبے بجٹ میں تجویز کئے جا رہے ہیں، ہسپتالوں میں ڈاکٹرز، نرسز اور پیرامیڈیکل سٹاف بھرتی کرنے کے لئے بھی نئے اسامیوں کا بجٹ بھی رکھا جا رہا ہے۔
دوسری طرف پنجاب اسمبلی کے بجٹ اجلاس کا ایجنڈا جاری کردیا گیا، دو آرڈیننس پیش کیے جائیں گے جبکہ پنجاب حکومت آئندہ مالی سال کا بجٹ کل پیش کرے گی۔بجٹ اجلاس کی صدارت سپیکر اسمبلی چودھری پرویزالہیٰ کریں گے، اسمبلی اجلاس سے پہلے بزنس ایڈوائزری کمیٹی کا اجلاس ہوگا، بزنس ایڈوائزری کمیٹی میں اپوزیشن کے ساتھ اجلاس کا ایجنڈا طے کیا جائے گا، حکومتی جماعت کی پارلیمانی پارٹی کا اجلاس بھی آج ہوگا، اجلاس کی صدارت وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کریں گے، اپوزیشن بھی بجٹ اجلاس میں حکومت کو ٹف ٹائم دینے کیلئے اجلاس کرے گی۔پنجاب اسمبلی کے اجلاس میں محکمہ ٹرانسپورٹ سے متعلق سوالات کے جواب دیئے جائیں گے، اجلاس میں دو آرڈیننس بھی پیش کیے جائیں گے، پنجاب کھل پنچایت آرڈیننس اور پنجاب لینڈ ریونیو ترمیمی آرڈیننس پیش کیے جائیں گے، اجلاس میں پنجاب زکوۃ و عشر کا ترمیمی بل بھی پیش کیا جائے گا، اجلاس میں پنجاب جوڈیشل اکیڈمی 2015-16 اور پنجاب پبلک سروس کمیشن 2017 کی سالانہ رپورٹس بھی پیش کی جائیں گی۔

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے