حیدر آباد میں مقامی اخبار کے صحافی کا مبینہ قتل

ڈیلی کاوش اخبار سے وابستہ الیاس وارثی کی لاش ان کے فلیٹ سے برآمد ہوئی

ویب ڈیسک : 16جون 2019
حیدرآباد میں کنٹونمنٹ پولیس اسٹیشن کی حدود میں صحافی کی لاش برآمد ہوئی ہے۔میڈیا رپورٹس کے مطابق اس حوالے سے بتایا گیا کہ ڈیلی کاوش اخبار سے وابستہ الیاس وارثی کی لاش ان کے فلیٹ سے برآمد ہوئی۔بتایا گیا کہ 50 سالہ الیاس وارثی کے سر پر تیز دھار چیز کا گہرا زخم بھی تھا۔متقول صحافی کے بیٹے حسنین نے پریس کلب کے متعلقہ حکام کو بذریعہ فون اطلاع دی کہ ان کے والد فون کال وصول نہیں کررہے۔بعدازاں حسنین اپنے دوستوں کے ہمراہ الرحیم شاپنگ پلازہ پہنچے جہاں تیسری منزل پر ان کے والد الیاس وارثی کا فلیٹ تھا۔اس ضمن میں بتایا گیا کہ ’حسنین اپنے دوست کے ہمراہ دروازہ توڑ کے اندر گئے تو اپنے والد کو مردہ حالت میں پایا جبکہ دوسرے کمرے میں موجود دونوں الماریاں کھلی ہوئی تھیں‘۔پولیس نے لاش تحویل میں لے کر لیاقت یونیورسٹی ہسپتال پہنچا دی۔
’فریڈم نیٹ‘ کے مطابق 2013 سے 2018 کے درمیان ملک بھر میں 26 صحافیوں کو قتل کیا گیا اور اس حوالے سے پنجاب سب سے خطرناک صوبہ ثابت ہوا، جہاں فرائض منصبی نبھاتے ہوئے 8 صحافیوں کو قتل کردیا گیا تھا۔اسی دوران خیبرپختونخوا میں 7 جبکہ سندھ اور بلوچستان میں 5، 5 صحافی قتل ہوئے تھے۔

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے