صادق آباد کے330کلو وزنی مریض کو آرمی ہیلی کاپٹر پر لاہور منتقل کردیا گیا

آرمی چیف نے موٹاپے کاشکار بیمار شہری کی مدد کا حکم دیا تھا

ویب ڈیسک| اپ ڈیٹ ،منگل18 جون 2019


لاہور،صادق آباد: آرمی چیف کے احکامات پر صادق آباد کے330کلو وزنی موٹاپے کے مریض کو آرمی ایوی ایشن کی خصوصی ائیر ایمبولینس کے ذریعے لاہور منتقل کردیا گیا ہے۔جہاں ملک کے مایہ ناز بیریاٹرک سرجن ڈاکٹر معاذ الحسن ان کا فری علاج کریں گے۔نور حسن شالیمار ہسپتال پہنچنے پر خوشی اور تشکر کے جذبات سے آبدیدہ ہوگئے۔انہوں نے خصوصی تعاون کرنے پر آرمی چیف کا شکریہ ادا کیا اور ان کی سلامتی و درازی عمر کی دعا کی۔موٹاپے کی بیماری میں مبتلا صادق آباد کے غریب شہری نور حسن نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے مدد کی درخواست کی تھی۔

تفصیلات کے مطابق آرمی چیف قمر جاوید باجوہ نے گذشتہ روز صادق آباد کے بیمار شہری نور حسن کو ائیر ایمبولینس کے ذریعے صادق آباد سے لاہور کے شالیمار ہسپتال منتقل کرنے کا حکم دیا تھا۔صادق آباد کے شہری نور حسن کا وزن 330 کلو گرام ہے، موٹاپے کے شکار شہری نے سوشل میڈیا پر آرمی چیف سے مدد کی اپیل کی تھی۔
موٹاپے کی بیماری میں مبتلا نور حسن کو آج شام آرمی ایوی ایشن کے خصوصی ہیلی کاپٹر پر صادق آباد سے لاہور کے شالیمار ہسپتال منتقل کیا گیا۔57سالہ نور حسن انتہائی زیادہ وزن کی وجہ سے حرکت کرنے سے بھی قاصر تھا اور وہ دس سال سے بستر پر پڑا ہوا تھا۔ نور حسن نے ایئر ایمبولینس کے لیے آرمی چیف سے درخواست کی تھی۔موٹاپے میں مبتلا شہری کو عام ایمبولینس پر منتقل نہیں کیا جا سکتا تھا، لاہور کے شالیمار ہسپتال میں 330کلو وزنی نور حسن کا علاج کیا جائے گا۔واضح رہے کہ مایہ ناز بیریاٹرک سرجن ڈاکٹر معاذ الحسن نے نورالحسن کا فری علاج کرنے کی پیشکش کی تھی۔ڈاکٹرمعاذ الحسن موٹاپے کا بغیر آپریشن علاج کرنے کے بین الاقوامی شہرت یافتہ ماہر سرجن ہیں جو بیرون ممالک سمیت پاکستان میں بھی کئی مریضوں کا کامیاب علاج کرچکے ہیں۔انہیں دنیا کے سب سے وزنی 540کلو کے مریض کا کامیاب علاج کرنے کا اعزاز بھی حاصل ہے

قافلہ نیوز سے گفتگو کرتے ہوۓ ڈاکٹر معاذالحسن کا کہنا تھا کہ وہ صادق آباد کے نورالحسن کا بغیر سرجری وزن کم کریں گے اور غریب شہری کے علاج کے لیے کوئی معاوضہ بھی نہیں لیں گے۔جب ان سے پوچھا گیا کہ نورحسن کا وزن کیسے ک ہوگا تو ڈاکٹر معاذ الحسن نے بتایا کہ نورالحسن کا علاج جس عمل کے تحت کیا جائے گا اسے طب کی زبان میں لیپروسکوپک سلیو گیسٹریکٹومی کہتے ہیں۔اس میں پیٹ چاک نہیں کیا جاتا،مریض کے معدے کا حجم آپ 80 فیصد کم کر دیتے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ اس آپریشن کے تقریباً دو سال بعد مریض کا وزن قریباً ڈیڑھ سے دو سو کلو کم ہو جاتا ہے۔ ‘جب نورالحسن کا وزن کم ہو جائے گا اوران کے جسم پر چربی لٹک جائے گی تو اسے پلاسٹک سرجری کے ذریعے کاٹ کر درست کریں گے۔ڈاکٹر معاذ الحسن کے مطابق نورالحسن کو اس عمل کے لیے تیار کرنے کے لیے ایک ہفتے سے کچھ زیادہ کا وقت لگ سکتا ہے۔ڈاکٹر معاذ الحسن کا دعویٰ ہے کہ ان کے آپریشنز میں کامیابی کا تناسب 95 فیصد ہے۔ ان کا دعوٰی ہے کہ وہ پاکستان میں باریاٹرک سرجری یعنی معدے کے بائی پاس آپریشن کی صلاحیت رکھنے والے واحد سرجن ہیں۔واضح رہے کہ ڈاکٹر معاذالحسن نے گذشتہ برس لاہور پریس کلب کے کتاب میلے میں بطور مہمان خصوصی شرکت کے موقع پر صحافیوں کے لیے بھی خصوصی ڈسکاؤنٹ کا اعلان کیا تھا۔
واضح رہے کہ صادق آباد کے غریب مریض کے علاج کے لیے جہاں سوشل میڈیا اور صادق آباد کے مقامی صحافیوں نے آواز اٹھائی ہے وہیں لاہور کے سینئر صحافی اور براڈکاسٹر طفیل شریف کی مخلصانہ کاوشیں بھی اس کارخیر میں شامل ہیں۔وہ ڈاکٹروں کی ٹیم کے ساتھ خود مریض کو ائیر ایمبولینس پر لاہور لانے کے لیے صادق آباد پہنچے ۔اس حوالے سے انہوں نے اپنے فیس بک پیج پر ایک پوسٹ بھی شئیر کی ہے۔

ٹیلی فون پر قافلہ نیوز سے بات کرتےہوۓ طفیل شریف نے بتایا کہ آرمی ایوی ایشن کی خصوصی ائیر ایمبولینس راولپنڈی سے صادق آباد پہنچی جہاں سے 330کلو وزنی مریض کو ائیر ایمبولینس میں شفٹ کرنے کے لیے ریسکیو 1122اور مقامی رضاکاروں نے گھر کی دیوار توڑ کر چارپائی سمیت منی ٹرک میں شفٹ کیا جہاں سے انہیں جناح سپورٹس کمپلیکس پہنچایا گیا۔اس موقع پر مقامی انتظامیہ کے افسر،اسسٹنٹ کمشنر کاشف نواز ڈوگر ،سماجی و سیاسی شخصیات چودھری سجاد وڑائچ اور ریسکیو کا عملہ بھی موجود تھا۔شہریوں نے نورالحسن پر گل پاشی بھی کی اور پاک فوج زندہ باد،آرمی چیف زندہ باد کے فلک شگاف نعرے بھی لگاۓ۔ چیف آف آرمی سٹاف کی ہدایات پر آرمی کے جوان بھی مریض کے شفٹنگ آپریشن کے لیے موجود تھے۔اس موقع پر عام عوام کو اسٹیڈیم کے اطراف میں جانے سے روک دیا گیا تھا تاہم شہری دور سے یہ مناظر دیکھتے رہے۔نور حسن کو شالیمار ہسپتال کے مخصوص وارڈ میں منتقل کردیا گیا ہے جہاں آئندہ ہفتے ان کا جدید طریقہ علاج سے وزن کم کیا جاۓ گا۔

آرمی ائیر ایمبولینس شالیمار ہسپتال کے ہیلی پیڈ پر۔جس میں مریض نورحسن موجود ہیں

صادق آباد میں نور حسن کو ہیلی پیڈ تک پہنچانے کےلیے منی ٹرک پر منتقل کیا جارہا ہے

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے