ریلوے کے کرایوں میں اضافہ،ریل کا سستا سفر بھی مہنگا ہوگیا

ویب ڈیسک : ہفتہ 22جون 2019
لاہور: وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید نے ریلوے کے کرایوں میں اضافے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ یکم جولائی سے اکانومی کلاس کرائے میں 100 روپے کا اضافہ ہوگا، کرایوں میں 6 سے 7 فیصد اضافہ کر رہے ہیں۔
وزیر ریلوے شیخ رشید نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ 3 جولائی کی شام کو مسافر ٹرین سر سید ایکسپریس کا افتتاح ہوگا، وزیر اعظم عمران خان راولپنڈی اسٹیشن پر ٹرین کا افتتاح کریں گے۔ میانوالی ایکسپریس کو لاہور، سرگودھا ایک ماہ میں چلایا جائے گا۔شیخ رشید کا کہنا تھا کہ کمانڈ اینڈ کنٹرول 117 بنا رہے ہیں، ٹرین کو ٹریکر سے منسلک کر کے بہتر کرنے کی کوشش کریں گے۔ یکم جولائی سے اکانومی کلاس کرائے میں 100 روپے کا اضافہ ہوگا، کرایوں میں 6 سے 7 فیصد اضافہ کر رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ کراچی سے مزید 3 فریٹ ٹرینیں چلائیں گے، جو ٹکٹیں فروخت ہوچکی ہیں اس میں اضافہ نہیں ہوگا۔ مختلف ٹرینوں کے کرایوں میں 3 سے 10 فیصد اضافہ کیا جا رہا ہے۔ 50 کلو میٹر کے اندر سفر کرنے والوں کے ٹکٹ پر اضافہ نہیں ہوگا۔شیخ رشید کا کہنا تھا کہ حیدر آباد میں ریلوے کا حادثہ انسانی غلطی کی وجہ سے ہوا، آئندہ 15 دن میں حادثے سے متعلق سزا اور جزا کا فیصلہ ہوجائے گا۔ عالمی مارکیٹ میں پیٹرول قیمتیں بڑھنے سے کرایوں میں اضافہ کر رہے ہیں۔ ریلوے میں مسافر ٹرینوں میں ایک بھی سیٹ دستیاب نہیں ہوتی۔انہوں نے کہا کہ ریلوے ملازمین کی فلاح و بہبود میرا مشن ہے، تمام ڈرائیورز کو میڈیکل فٹنس ٹیسٹ کے لیے والٹن بھیج رہے ہیں۔ تمام اسسٹنٹ ڈرائیورز کو ہدایت کی ہے میڈیکل کے لیے رپورٹ کریں۔ کوئی افسر 3 سال سے زائد عہدے پر نہیں رہے گا۔ 92 میں سے 72 افسران کا تبادلہ کر دیا ہے۔ ریلوے کے خسارے میں بتدریج کمی ہو رہی ہے۔
وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ آپ چاہتے ہیں عمران خان تقریریں بھی نہ کریں، میثاق معیشت کا حامی ہوں ہونے دیں۔ اسد عمر کی تقریر کو انڈورس کرتا ہوں۔انہوں نے کہا کہ میں نے پرانی ویگنز ٹھیک کیں، خسارہ کم مسافر ٹرینوں نے کیا، 6 فیصد کرایے میں اضافہ مجبوری ہے۔ بھارت نے سکھ یاتریوں کو روک کر زیادتی کی ہے۔ سکھ یاتریوں کو ایسی سروس دیں گے وہ اپنے گھر جیسا محسوس کریں گے۔ ایم ایل ون پر پی سی ون بھیجی ہے، ہر ملازم کا اپنا گھر ہوگا۔ بڑے شہروں میں ہائی فلور اپارٹمنٹس بنائیں گے۔وفاقی وزیر نے مزید کہا کہ فضل الرحمٰن کی تاریخ آئے گی تو پتہ چل جائے گا، یہ لوگ چندا دے کر فضل الرحمٰن سے بندے بلوائیں گے، صرف 2 افراد کو منی لانڈرنگ کیسز سے چھوٹ چاہیئے۔
واضح رہے کہ موجود حکومت نے اس سے قبل گزشتہ برس دسمبر میں بھی ٹرینوں کے کرایوں میں دس سے 19 فیصد تک اضافہ کر دیاتھا۔ جس کا اطلاق سات دسمبر سے ہوا۔پاکستان ریلوے کے جاری کردہ نوٹیفکیشن کے مطابق کراچی سے لاہور جانے والی قراقرم ایکسپریس اور گرین لائن کے ای سی بزنس کے کرائے میں 500 روپے کا اضافہ کیا گیا ہے جب کہ اکانومی کلاس کے کرایوں میں 170 روپے کا اضافہ کر دیا گیا ہے۔کراچی ایکسپریس، بزنس ایکسپریس، شالیمار، شاہ حسین ایکسپریس کے اے سی سلیپرکرایوں میں 670 روپے، اے سی بزنس میں540 روپے اور اے سی پارلر میں 390 روپے کا اضافہ کیا گیا ہے۔اے سی اسٹینڈرڈ کے کرائے میں 380 روپے جب کہ اکانومی کے کرائے میں 180 روپے کا اضافہ کیا گیا ہے۔ اسی طرح کراچی سے پشاور جانے والی خیبر میل کے ای سی سلیپر میں 850 روپے، اے سی بزنس میں 600 روپے، ای سی اسٹینڈرڈ میں 490 روپے اور اکانومی کلاس میں 190 روپے کا اضافہ کیا گیا ہے۔کراچی سے راولپنڈی جانے والی تیز گام کے اے سی سلیپرمیں 890 روپے، اے سی بزنس میں 660 روپے، اے سی اسٹینڈرڈ میں 530 روپے اور اکانومی کلاس میں 210 روپے کا اضافہ کیا گیا ہے۔کراچی سی فیصل آباد جانے والی ملت ایکسپریس کے اے سی بزنس میں 540 روپے اور اکانومی میں 160 روپے کا اضافہ کردیا گیا ہے جب کہ کراچی سے ملتان جانے والی بہاؤالدین ذکریا کے اے سی بزنس میں 480 روپے، اے سی اسٹینڈرڈ میں 360 روپے اوراکانومی کلاس میں 140 روپے کا اضافہ کیا گیا ہے۔کراچی سے راولپنڈی جانے والی کراچی ایکسپریس کی اکانومی کلاس میں 250 روپے کا اضافہ کیا گیا ہے جب کہ کراچی سے سکھرجانے والی اے سی سلیپرمیں 350 روپے، اے سی بزنس میں 230 روپے، اے سی اسٹینڈرڈ میں 180 روپے جب کہ اکانومی کلاس میں 80 روپے کا اضافہ کیا گیا ۔

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے