پاکستان اور قطر کے مابین متعدد شعبوں میں تعاون کےلیے معاہدوں پر دستخط

ویب ڈیسک |اپ ڈیٹ ہفتہ 22جون 2019

اسلام آباد : پاکستان اور قطر کے درمیان تجارت اور سرمایہ کاری میں تعاون کے لیے ورکنگ گروپ کے قیام، سیاحت اور تجارت کی ترقی کے لیے تعاون سمیت منی لانڈرنگ، دہشت گردی کی مالی معاونت کے انسداد اورخفیہ معلومات کے تبادلے سے متعلق مفاہمتی یادداشت پر دستخط کیے گئے۔واضح رہے کہ قطر کے امیر شیخ تمیم بن حمد الثانی 2 روزہ دورے پر پاکستان میں موجود ہیں۔امیر قطر شیخ تمیم بن حمد الثانی اور وزیر اعظم عمران خان بھی وزیر اعظم ہاﺅس میں منعقدہ تقریب میں موجود تھے۔
قبل ازیں وزیر اعظم عمران خان اور امیر قطر کے مابین ون آن ون ملاقات ہوئی اور وفود کی سطح پر مذاکرات بھی ہوئے تھے جس میں دو طرفہ تعلقات کے تمام پہلوﺅں کو زیر بحث لایا گیا۔وزیر اعظم عمران خان نے امیر قطر شیخ تمیم بن حمد الثانی سے ملاقات کے دوران اپنا دستخط کیا ہوا بلا تحفے میں دیا۔
امیر قطر نے بھی عمران خان کو قطر کی قومی فٹبال ٹیم کی شرٹ تحفے میں پیش کی۔(خیال رہے کہ فٹبال کا آئندہ ورلڈکپ 2022 میں قطر میں ہی منقعد کیا جائے گا جس کی تیاریاں قطر نے ابھی سے ہی شروع کردی ہیں جبکہ قطر اس ایونٹ میں میزبان ملک کی حیثیت سے شرکت کرے گا۔)
بعد ازاں دونوں ملکوں کے مابین متعدد شعبوں میں تعاون سے متعلق مفاہمت کی یاداشت پر دستخط ہوئے۔پاکستان اور قطر کے مابین تجارت اور سرمایہ کاری میں تعاون کے لیے ورکنگ گروپ کے قیام سے متعلق مفاہمت کی یاداشت پر دستخط ہوئے جس پر قطر کے وزیر خزانہ علی شریف العمادی اور مشیر تجارت عبدالرزاق داﺅد نے دستخط کیے۔
سیاحت اور تجارت کے شعبوں میں ترقی کے لیے تعاون سے متعلق یاداشت پر سیکرٹری جنرل قطر نیشنل ٹوارزم کونسل اکبر الباقر اور وزیر برائے بین الصوبائی رابطہ فہمیدہ مرزا نے دستخط کئے۔
دونوں ملکوں کے درمیان منی لانڈرنگ، دہشت گردی کی مالی معاونت کے انسداد اورخفیہ معلومات کے تبادلے سے متعلق مفاہمتی یادداشت پر فنانشل انفارمیشن یونٹ قطر کے سربراہ شیخ احمد بن عید الطہانی اور قائم مقام ڈائریکٹر جنرل (ڈی جی) فنانشل مانیٹرنگ یونٹ منیر احمد نے دستخط کیے۔
اس سے قبل قطر کے امیر شیخ تمیم بن حمد الثانی کا خصوصی طیارہ نور خان ایئربیس پر اترا تھا جہاں ان کا پرتپاک استقبال کیا گیا۔
وزیر اعظم عمران خان اور دیگر اعلیٰ حکام نے شیخ تمیم بن حمد الثانی کا استقبال کیا، جہاں انہیں 21 توپوں کی سلامی بھی دی گئی جبکہ وزیر اعظم نے معزز مہمان کی گاڑی خود چلائی۔حکومت پاکستان کی طرف سے جاری شیڈول کے مطابق امیر قطر کو پاک فضائیہ کی جانب سے جے ایف 17 تھنڈر طیاروں نے فضائی سلامی دی۔
پاکستان کی سرزمین پر پہنچتے ہی امیر قطر کو 21 توپوں کی سلامی دی گئی۔ امیر قطر تمیم بن حماد الثانی کو شام 6 بجکر 25 منٹ پر وزیر اعظم ہاؤس میں گارڈ آف آنربھی پیش کیا گیا۔
بعدازاں وزیراعظم ہاؤس میں پاکستان اور قطر کے درمیان مختلف معاہدوں پر دستخط کی تقریب منعقد ہوئی۔تقریب کے دوران تجارت اور سرمایہ کاری میں تعاون کے لیے ورکنگ گروپ کی یادداشت پر دستخط کیے گئے۔دونوں ملکوں کے درمیان سیاحت اور تجارت کی ترقی کے لیے تعاون کی مفاہمتی یادداشت جبکہ منی لانڈرنگ اور دہشت گردی کی مالی معاونت کے انسداد،خفیہ معلومات کے تبادلے کی یادداشت پر بھی دستخط کیے گئے۔وزیراعظم عمران خان نے امیر قطر کے اعزاز میں رات ساڑھے 8 بجے عشائیہ دیا،عشائیہ میں عسکری حکام، کابینہ ارکان، اسپیکر قومی اسمبلی، چیئرمین سینیٹ سمیت سیاسی شخصیات شریک تھیں۔ امیر قطر آج رات اسلام آباد کے نجی ہوٹل میں قیام کریں گے۔
امیر قطراپنے دورۂ پاکستان کے دوسرے روز یعنی اتوار کی صبح 11 بجے ایوان صدر پہنچیں گےجہاں انکی ملاقات صدر مملکت عارف علوی سے ساڑھے 11 بجے ہو گی۔شیڈول کے مطابق امیر قطر 12 بجے ایوان صدر میں سرمایہ کاری تقریب میں بھی شریک ہوں گے۔ امیر قطرکے اعزاز میں ایوان صدر میں ظہرانہ ہو گا ،وزیر اعظم، اعلیٰ عسکری و سیاسی قیادت شریک ہوگی۔دوپہر ایک بجے کے بعد قطری امیر شیخ تمیم بن حماد واپسی کے لئے نور خان ائیر پورٹ روانہ ہوں گے جہاں وفاقی وزراء معززمہمانوں کو رخصت کریں گے۔

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے