دوہری شہریت کے حامل طلبا میڈیکل کالجز میں داخلےکےاہل قرار

ویب ڈیسک : 14اکتوبر2019
لاہور : لاہور ہائی کورٹ نے دوہری شہریت کے حامل طلبا کو میڈیکل کالجز میں داخلےکا اہل قرار دیتے ہوئے پی ایم ڈی سی آرڈیننس برائے سال 2019 کالعدم قرار دے دیا، اس سے قبل عدالتی حکم امتناعی پر یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز نے میرٹ لسٹ بھی روک لی تھی۔
لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس امیر بھٹی نے دوہری شہریت رکھنے والے طالبعلموں کو میڈیکل کالجز میں داخلہ نہ دینے کے خلاف درخواستوں کا فیصلہ سنا دیا، فیصلے میں عدالت نے پاکستان سے اے لیول کرنے والے دوہری شہریت کے حامل طالبعلموں کومیڈیکل کالجز میں داخلے کا اہل قرار دے دیا۔
عدالت نے دوہری شہریت کے حامل طالبعلموں کومیڈیکل کالجز ایڈمیشن رولز 2018 کے تحت میڈیکل کالجز میں داخلے دینے اور 2018کے داخلہ رولز کے تحت نئی میرٹ لسٹ جاری کرنے کا بھی حکم دیا۔
درخواست گزاروں کے وکیل میاں اسلم نے دلائل دیتے ہوئے کہا پاکستان سے اے لیول کرنے والے دوہری شہریت کے حامل طلبا کو داخلے سے روکا جانا آئین کے تحت بنیادی حقوق کی خلاف ورزی ہے، آئین کے تحت دوہری شہریت کے حامل طلبا کے حقوق سلب نہیں کئے جاسکتے۔اس سے قبل عدالتی حکم امتناعی پر یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز نے میرٹ لسٹ بھی روک لی تھی۔
یاد رہے گذشتہ سال دسمبر میں سپریم کورٹ نے دوران ملازمت غیرملکی شہریت لینے والے ملازمین کیخلاف کارروائی کا حکم دیتے ہوئے کہا غیرملکی شہریت والے سرکاری ملازمین ریاست پاکستان کے مفاد کے لئے خطرہ ہیں، ایسے ملازمین کا نام منفی فہرست میں ڈالیں۔
سپریم کورٹ نے فیصلہ میں کہا تھا غیر پاکستانیوں کو پاکستان میں عہدے دینے پر مکمل پابندی ہونی چاہیئے، غیرپاکستانیوں کو عہدے دینے پر مکمل پابندی کے بارے پارلیمنٹ پالیسی وضع کرے جبکہ ضروری حالات میں کسی غیرپاکستانی کو عہدہ دینے سے قبل متعلقہ کابینہ سے منظوری لی جائے۔

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے