"نواز شریف کوکسی بھی قریبی رشتہ داریا کارکن نے خون نہیں دیا”

ویب ڈیسک : بدھ23اکتوبر2019
لاہور: سابق وزیراعظم اور مسلم لیگ نواز کے قائد نواز شریف کو گزشتہ روز اشد ضرورت ہونے کے باوجود کسی بھی قریبی رشتہ داریا کارکن نے خون نہیں دیا۔
اطلاعات کے مطابق ایک نجی کالج کے چار طالب علموں نے خون دیا۔ذرائع نے بتایا کہ 18 سالہ لڑکوں کے تازہ خون سے سفید سیلز لیے گئے۔
ان کے مطابق قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف اور نواز شریف کے بھائی شہباز شریف نے خون دینے کی درخواست کی تھی اور ان کا نمونہ بھی لیا گیا تھا تاہم بیمار ہونے کی وجہ سے خون نہیں لیا گیا۔ذرائع کا مزید کہنا تھا کہ دونوں بھائیوں کا خون او پازیٹیو ہے۔دوسری جانب سروسزاسپتال میں زیر علاج سابق وزیراعظم کی طبیعت میں بہتری آئی ہے۔نواز شریف کو 4 میگا یونٹس لگنے سے پلیٹ لیٹس کی تعداد 29 ہزار ہوگئی، میڈیکل بورڈ نے سابق وزیراعظم کی صحت بہتر قرار دے دی۔
سابق وزیراعظم نواز شریف کا سروسز ہسپتال لاہور میں علاج جاری ہے، 6 رکنی بورڈ سمیت سینئر ڈاکٹر نواز شریف کے علاج معالجے میں مصروف ہیں۔ پروفیسر محمود ایاز نے کہا ہے کہ نواز شریف کے پلیٹ لیٹس کی تعداد 29 ہزار ہوگئی، بورڈ کچھ دیر بعد نواز شریف کا طبی معائنہ کرے گا، معائنے کے بعد 6 رکنی بورڈ کا اجلاس آج پھر ہوگا۔
پروفیسر محمود ایاز کا کہنا تھا اجلاس میں سابقہ ٹیسٹ رپورٹس نئی ادویات کا جائزہ لے گا، نواز شریف کے مزید ٹیسٹ سے متعلق بھی بورڈ فیصلہ کرے گا، نواز شریف کے علاج کے لئے تین شفٹوں میں 21 ڈاکٹرز نواز شریف کے علاج کے لئے خدمات سرانجام دے رہے ہیں۔ مسلم لیگ ن کی ترجمان مریم اورنگزیب نے کہا نواز شریف کی صحت بہتر ہو رہی ہے، بیرون ملک جانے میں صداقت نہیں۔ ادھر مسلم لیگ ن کی رکن سعدیہ تیمور نے پنجاب اسمبلی میں قرار داد جمع کرا ئی ہے۔ قرارداد میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ مریم نواز کو نواز شریف سے ملاقات کیلئے پرول پر رہا کیا جائے۔
دوسری طرف محکمہ داخلہ پنجاب نے نیب کی درخواست پر سابق وزیر اعظم کی سکیورٹی بڑھا دی ہے، وی وی آئی پی وارڈ میں سی سی ٹی وی کیمرے لگا دئیے گئے ہیں۔
گزشتہ روز شہباز شریف نے نواز شریف کو اسپتال منتقل نہ کرنے پر شدید احتجاج کرتے ہوئے کہا تھا کہ سرکاری رپورٹس میں سنگین خطرات کی واضح نشاندہی کے باوجود اسپتال منتقل نہ کرنا حکومتی بے حسی اور بدترین سیاسی انتقام پہ مبنی پالیسی ہے۔قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف نے کہا ہے کہ نوازشریف کی جان سے کھیلا جارہا ہے اور خبردار کیا کہ اگر خدانخواستہ کچھ ہوا تو عمران نیازی کو قاتل ٹھہرائیں گے۔

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے