سانحہ اے پی ایس کو 5 سال بیت گئے، زخم آج بھی تازہ

ویب ڈیسک : 16دسمبر2019

اسلام آباد: پشاور کے آرمی پبلک سکول (اے پی ایس) میں ہونے والے دہشت گرد حملے کو پانچ سال بیت گئے مگر زخم آج بھی تازہ ہیں۔
16 دسمبر 2014 کو سفاک دہشت گردوں نے آرمی پبلک اسکول پشاور کے 132 معصوم بچوں سمیت149 افراد کو بے دردی سےشہید کر دیا تھا ۔
علم کی روشنی پھیلانے والے اساتذہ نے بھی اپنی جانیں قربان کیں ۔ دہشت گرد علم کی شمع بجھانے کا ناپاک ارادہ لے کر آئے مگر کامیاب نہ ہو سکے ۔ لہو سے جلے علم کے چراغ آج بھی روشن ہیں۔
سولہ دسمبر دو ہزار چودہ کا سورج معمول کے مطابق طلوع ہوا ۔ آنکھوں میں خواب سجائے آرمی پبلک اسکول پشاور کے طلبا اور طالبات نے اسکول کا رخ کیا کہ اس دوران دس بچ کر چالیس منٹ پر چھ دہشت گردوں نے اسکول پر حملہ کر دیا ۔
پشاور کی فضا دھماکوں اور گولیوں کی آوازوں سے گونج اٹھی، جدید اسحلے سے لیس امن دشمنوں نے نہتے بچوں اور اساتذہ کو نشانہ بنایا۔انسانیت کے لفظ سے ناآشنا افراد نے ایک سو بتیس بچوں سمیت ایک سو انچاس افراد کو شہید کر دیا۔اس سانحے سے بہادری اور جرات کی کئی داستانیں بھی جڑ گئیں ۔
پرنسپل آرمی پبلک اسکول طاہرہ قاضی کی فرض شناسی برسوں یاد رکھے جائے گی ۔ بہادر خاتون نے اپنی جان قربان کردی لیکن دہشت گردوں اور بچوں کے بیچ دیوار بن کر کھڑی رہیں۔
سولہ دسمبر کے دن اس سانحے کے زخم تو تازہ ہو جاتے ہیں مگر قوم کے عزم، حوصلے اور جرات نے ان الفاظ کو ایک نئی تعریف دے دی۔بزدل دہشت گردوں نے اسکول پر حملہ کرکے علم کی شمع بجھانا چاہی ۔ مستقبل کے معماروں کو نشانہ بنایا مگر قوم کے حوصلے پست نہ کر سکے ۔
بچوں سے ان کے خواب تو چھین لیے مگر والدین کے عزم کو کمزور کرنے میں کامیاب نہیں ہوئے۔ لہو سے جلے علم کے چراغ آج بھی روشن ہیں۔ اپنے پیاروں اور لخت جگر کو کھونے والوں کے حوصلے بلند ہیں۔
سانحہ اے پی ایس کے بعد قوم اور سیکیورٹی اداروں نے نئے عزم کے ساتھ دہشت گردوں کا مقابلہ کیا اوران پر پاک دھرتی کی زمین تنگ کر دی۔معصوم بچوں پرحملہ کرنے والے دہشت گردوں کو افواج پاکستان نے اسی وقت آپریشن میں جہنم واصل کردیا اور ان کے سہولت کار بھی اپنے انجام کو پہنچ گئے ۔
وزیراعظم عمران خان نے سانحہ اے پی ایس کی پانچویں برسی پر اپنے پیغام میں کہا ہے کہ معصوموں کے خون نے قوم کو ہر طرح کی انتہا پسندی، دہشت گردی، تشدد اور نفرت کے خلاف متحد کیا۔
عمران خان نے کہا کہ آج ہم سانحہ اے پی ایس کے متاثرین کے لیے دعاگو ہیں اور اپنے نوجوان شہدا کو خراج عقیدت پیش کرتے ہیں۔ انہوں نے اپنے پیغام میں مسلح افواج، پولیس اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کی قربانیوں کو بھی خراج تحسین پیش کیا۔وزیراعظم نے کہا ہم عہد کرتے ہیں عسکریت پسندنظریے کو ملک و قوم کویرغمال نہیں بنانے دیں گے۔
چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی نے اپنے پیغام میں کہا کہ سانحہ اے پی ایس کو کبھی فراموش نہں جا سکتا۔ اے پی ایس کے سانحے نے دہشت گردی کے خلاف قومی عزم کو مزید مستحکم کیا۔
ان کا کہنا تھا کہ سانحہ اے پی ایس ملکی تاریخ کا سیاہ ترین، دلخراش اور ناقابل فراموش واقعہ ہے جس نے معصوم نہتے، بے گناہوں کو شہید کر کے والدین کے ساتھ ساتھ پوری قوم پر ناقابل فراموش غم کے پہاڑ ڈھا دیے۔
وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے اپنے پیغام میں کہا کہ آرمی پبلک سکول پشاور کے بچوں اور اساتذہ نے عظیم مقصد کے حصول کیلئے اپنی قیمتی جانوں کی عظیم قربانی دی۔ان کا کہنا تھا کہ پانچ برس قبل معصوم بچوں کے ساتھ بربریت کرنے والے درندے اپنے انجام کو پہنچ چکے ہیں۔ آرمی پبلک سکول کے سانحہ میں شہید ہونیوالے بچے اور اساتذہ کی عظیم قربانیاں رنگ لائی ہیں۔
پاک فوج کی جانب سے جاری پیغام میں کہا گیا کہ سانحہ اے پی ایس کو کبھی نہیں بھلایا جائے گا۔ آرمی پبلک اسکول حملے میں ملوث 5 دہشتگردوں کو تختہ دار پر لٹکایا جاچکا ہے جن کو فوجی عدالتوں کے ذریعے سزا سنائی گئی تھی۔
اپنے پیغام میں پاک فوج نے اے پی ایس کے شہدا اور ان کے اہلخانہ کو سلام پیش کیا۔ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے اپنے پیغام میں کہا کہ پاکستان میں دیرپا امن اور خوشحالی کےلیے متحد ہوکر آگے بڑھنا ہوگا۔
ادھر آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے کہ سانحہ اے پی ایس کے شہدا کو نہیں بھولے۔ ملک کو امن واستحکام کی منرل تک پہنچائیں گے۔انہوں نے اس عزم کا اعادہ کیا کہ ہم متحد ہیں اور ملک کو آگے لے کر جائیں گے۔ اس موقع پر آرمی چیف نے اے پی ایس کے شہدا کے والدین کو سلام پیش کیا۔
سربراہ پاک فوج نے کہا کہ قوم نے تمام چیلنجز کا بہادری سے مقابلہ کیا۔ ان کا کہنا ہے کہ پاکستان نے دہشت گردی کے خطرات سے نمٹںے کے لیے بھاری قیمت ادا کی ہے۔کشمیر کے حوالے سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ بھارتی مظالم کے خلاف ہر فورم پر آواز اٹھائیں گے۔
دوسری جانب سانحہ اے پی ایس پشاور کی چوتھی برسی کے موقع پر پاک فضائیہ کے سربراہ ائیر چیف مارشل مجاہد انور خان نے اے پی ایس کے شہداء کو زبردست خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاک فضا ئیہ کا ہر فرد شہداء کے لواحقین کے غم میں برابر کا شریک ہے۔انہوں نے کہا کہ پاک فضائیہ اور پوری قوم سانحہ پشاور کے شہدا کی عظیم قربانی کو کبھی فراموش نہیں کرسکتی۔ترجما ن پا ک فضا ئیہ کے مطابق ائیر چیف نے وطن عزیز سے دہشت گردی کے ناسور کو جڑ سے ختم کرنے کے عزم کا اعادہ بھی کیا-

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے