نثر پارے

  • بھرتی کا پتلا

    بھرتی کا پتلا افسانہ نگار: منصور ارحم وہ چاہے بھی تو یہ نہیں بتا سکتا کہ جو سرما لوٹ آیا ہے وہ پرانا ہے یا پھر اجنبی۔رہٹ کی جگہ رات کی تاریکی میں ٹیوب ویل کی آواز گونجتی ہے ویسے یہ ہمیشہ نہیں سنائی دے سکتی وہ محتاج ہے اس نہر کی جس میں پانی کی بہتات ہے۔بانجھ نہر ٹیوب…

    Read More »
  • افسانہ

    لائبریری میں اُس نے محمود بھائی،ریا ض بھائی اور طاہر بھائی کی گردان کرتے ہوئے جب مجھے شاہد صاحب کہہ کر مخاطب کیا تو محمود کی رگِ حسد بھڑک اٹھی اور غصے میں بولا ” یعنی ہم تینوں بھائی اور یہ صاحب ہے۔اسے بھی بھائی کہو ” وہ بوکھلا گئی، پھر سنھبل کر بولی ” اصل میں آپ سمجھتے نہیں…

    Read More »
  • سانس لیتی جیتی جاگتی کتابیں

    سانس لیتی جیتی جاگتی کتابیں محمد عامر خاکوانی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ کتابوں کے ساتھ گزرے لمحات سے زیادہ دل خوش کن اور یاد رہنے والی ساعتیں اور نہیں ہوسکتیں۔ میری زندگی کی جو مسرور کر دینے والی گھڑیاں ہیں ان میں کتابوں نے سب سے زیادہ اہم کردار ادا کیا۔ مجھے یاد ہے کہ میرا بچپن، لڑکپن پورے گھروالوں سے الگ تھلگ…

    Read More »
  • پہلی محبت

    پہلی محبت تحریر: حمزہ حامی تمام یونیورسٹی فیلوز کو بھی معلوم ہو گیا ہے کہ موصوف ہلکی پھلکی شاعری بھی کرتے ہیں ، ایک کلاس فیلو نے میری کچھ نظمیں پڑھ لیں۔کل لائبریری میں بیٹھا تھا وہ آئی اور برابر والی نشست پر تشریف فرما ہو گئی ۔میں کتاب میں گم تھا اس نے کھنکار کر مجھے متوجہ کیا میں…

    Read More »
  • اقرار نامہ

    تحریر | وجیہہ جاوید میری بات تو سنو !اے سخن ور وجیہ مرد، نہ جانے تمہارا ساتھ نصیب ہوئے کتنے ہی دن،ہفتے ،مہینے گزر گئے۔میں ازلوں سے حساب کی کچی عورت محض باتیں بنانے کے فن سے ہی واقف ہوں ۔ تمہارے آجانے کے بعد تو شاید اس میں مزید بہاؤ آگیا ہے۔ جب کوئی توجہ سے سننے والا انسان…

    Read More »
  • مداح ، مختصرکہانی

    مداح……ایک مختصر کہانی لیاقت علی(اسسٹنٹ پروفیسر اردو)اسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور نصیرے مراثی کے پاس طاقت اور پیسہ بھلے ہی کم تھا مگر گائوں کےسبھی با اثر اور طاقت ور اس کی چرب زبانی اور حاضر دماغی کی وجہ سے اسے عزیز رکھتے تھے..ممکن ہے کہ اس میں کامل سچائی نہ ہو مگر نصیرے کا گمان یہی تھا کہ یہ سبھی با…

    Read More »
  • سمندر کی پکار

    سمندر کی پکار تحریر : خالد نذیر(سابق آفیسر تعلقات عامہ بہاول پور) نجانے کیوں مجھے میرا جی کی نظم” سمندر کا بلاوا“ہمیشہ سے بہت زیادہ پسند رہی ہےاور اب بھی جب میں اس نظم کو پڑھتا ہوں تو میرے دل پر ایک عجیب سی کیفیت طاری ہو جاتی ہے۔اس کی ایک وجہ صحرائی اور چولستانی خمیر سے گندھا ہوا میرا…

    Read More »
  • سوشل میڈیا سے انتخاب

    سوشل میڈیا سے انتخاب پاؤں سے کانٹا نکالتے ہوئے ننھے کریم کی چیخ نکل گئی۔ وہ ایڑی کو دونوں ہتھیلیوں سے دباتے ہوئے پکارا ’’ ہائے اماں !‘‘ وہ مبہوت و ساکن بیٹھ گیا اور سامنے ویران کھیتوں پر نگاہیں گاڑھ دیں، یوں معلوم ہوتا تھا جیسے وہ اپنی ماں کی آواز کا منتظر ہوتا ہے۔ ” میرے انمول لال!…

    Read More »
  • صرف ایک کام،افسانہ

    صرف ایک کام(افسانہ) محمد فاروق اکمل ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ بڑی عجیب سی شرط تھی اس کی ۔ کہتا تھا کہ ہماراسب کچھ سانجھا ہے ۔ شہر میں پڑھ لکھ کر ، محنت منت کرکے میں نے مدتوں میں جو مقام کمایا تھا ، اس پر بھی حق جتلاتا تھا۔ اُسے اپنے نکمے پن کا بھی خیال نہ آتا ۔ بس ہر دفعہ…

    Read More »
  • مکتوب نگاری،انٹرنیٹ اور سوشل میڈیا

    مکتوب نگاری،انٹرنیٹ اور سوشل میڈیا یوسف منہاس سائنس کی فیوض و بر کات کے باعث جہاں دنیا انگلیوں کے پوروں پر سمٹ آئی، وہیں مکتوب نگاری کا عمل نہ صرف متروک ہو کر رہ گیا بلکہ اس صنف کے ذریعے ادب میں تخلیق کا دروازہ بھی عملاً بند ہو کر رہ گیا ہے۔ جانگسل تنہائیوں کا کرب، ہجر و فراق…

    Read More »