امیر قطر تین معاہدوں اور اعلیٰ سول اعزاز کیساتھ واپس روانہ

امیر قطر کے دورۂ پاکستان کا اعلامیہ جاری

ویب ڈیسک : 23جون 2019

اسلام آباد: امیر قطر شیخ تمیم بن حمد الثانی اپنے دورہ پاکستان ختم ہونے کے بعد واپس روانہ ہوگئے ہیں۔ دونوں ممالک کے درمیان منی لانڈرنگ کے سد باب سمیت سرمایہ کاری اور سیاحت کے تین معاہدے ہوئے۔ صدر پاکستان ڈاکٹر عارف علوی نے معزز مہان کو روانہ کیا۔ شیخ تمیم بن حمد الثانی کو علی ترین سول ایوارڈ ‘نشان پاکستان’ سے بھی نوازا گیا۔ سول ایوارڈ دینے کی پروقار تقریب ایوان صدر میں ہوئی جس میں حکومتی وزرا اور اہم شخصیات نے شرکت کی۔
اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر، گورنرپنجاب چودھری محمد سرور، وزیر ریلوے شیخ رشید، وزیر توانائی عمر ایوب، وفاقی وزیر بحری امور علی زیدی، مشیر اطلاعات فردوس عاشق اعوان اور وزیراعظم کےمشیر زلفی بخاری سمیت دیگر رہنما بھی تقریب میں شریک ہوئے۔روانگی سے قبل معزز مہمان کو جے ایف 17 تھنڈر اور مشاق طیارو ں پر بریفنگ بھی دی گئی۔ امیر قطر نے جے ایف 17تھنڈرطیارے کا معائنہ کیا۔امیر قطر گزشتہ روز ہی پاکستان آئے تھے اور دونوں ممالک کے درمیان سرمایہ کاری میں تعاون کے لیے ورکنگ گروپ کی یادداشت پر دستخط ہوئے ہیں۔سیاحت اور تجارت کی ترقی کے لیے تعاون کی مفاہمتی یادداشت جبکہ منی لانڈرنگ اور دہشت گردی کی مالی معاونت کے انسداد، خفیہ معلومات کے تبادلے کی یاد داشت پر بھی دستخط کیے گئے۔

امیر قطر کے دورۂ پاکستان کا اعلامیہ جاری کر دیا گیا، امیر قطر نے وزیر اعظم عمران خان کی دعوت پر دورہ کیا۔حکومت کی جانب سے جاری اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ امیر قطر شیخ تمیم بن حمد الثانی وزیر اعظم عمران خان کی دعوت پاکستان آئے، ان کے ہم راہ وزرا اور دیگر حکام پر مشتمل اعلیٰ سطح وفد بھی پہنچا۔وزیراعظم اور امیر قطر کی ون آن ون اور وفود کی سطح پر ملاقات ہوئی، ملاقات میں پاک قطر دو طرفہ تعلقات کے تمام پہلوؤں کا جائزہ لیا گیا، دونوں رہنماؤں نے باہمی تعلقات کو مزید مضبوط کرنے پر زور دیا، پاکستان اور قطر میں سیاسی، اقتصادی شراکت داری کو فروغ دینے پر اتفاق کیا گیا۔اعلامیے کے مطابق دونوں ممالک نے دو طرفہ تجارت کو بڑھانے کے لیے اقدامات پر اتفاق کیا اور ایل این جی، ایل پی جی سمیت توانائی کے شعبے میں تعاون بڑھانے کا فیصلہ ہوا، تیل اور گیس کی تلاش سمیت پیداوار کے شعبوں میں بھی تعاون پر اتفاق کیا گیا۔زراعت، سیاحت اور صنعتی شعبے میں سرمایہ کاری کو فروغ دینے کا فیصلہ کیا گیا جب کہ قطر میں پاکستانی کارکنوں اور ملازمین کی تعداد میں اضافے، ایوی ایشن، بحری معاملات، دفاعی شعبوں میں تعاون بڑھانے، اعلیٰ تعلیم، فوڈ انڈسڑی، دفاعی پیداوار بڑھانے کے لیے تعاون پر اتفاق کیا گیا۔اعلامیے میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان معاہدوں کو حتمی شکل دینے کے لیے وزرا کے درمیان رابطے بڑھائے جائیں گے۔دونوں رہنماؤں نے علاقائی صورت حال اور افغان امن عمل پر بھی تبادلہ خیال کیا، وفود کی سطح پر مذاکرات کے بعد مختلف معاہدوں پر دستخط کیے گئے، تجارت، سیاحت، سرمایہ کاری میں تعاون کے لیے ورکنگ گروپ کی یادداشت پر دستخط کیے گئے۔منی لانڈرنگ، دہشت گردی کی مالی معاونت کے انسداد، خفیہ معلومات کے تبادلے پر بھی یادداشت پر دستخط کیے گئے۔وزیراعظم عمران خان کی جانب سے امیر قطر کے اعزاز میں عشایے کا اہتمام کیا گیا، امیر قطر نے وزیر اعظم کو قطر کی فٹ بال ٹیم کی جرسی بہ طور تحفہ پیش کی جب کہ وزیر اعظم عمران خان نے انھیں دستخط شدہ بلا بہ طور تحفہ دیا۔

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے