لفظ ‘سلیکٹڈ’ پر قومی اسمبلی میں پابندی، زرداری کا اراکین سے مشاورت کا فیصلہ

عمران خان سلیکٹڈ نہیں تو پھر لفظ پر پابندی کیوں؟ شیری رحمٰن

ویب ڈیسک : پیر 24جون 2019
اسلام آباد: سابق صدر اور پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری نے کہا ہے کہ وہ لفظ سلیکٹڈ کی قومی اسمبلی میں پابندی پر اراکین پارلیمنٹ سے مشاورت کریں گے۔خیال رہے کہ قومی اسمبلی میں اپوزیشن اراکین کی جانب سے وزیراعظم عمران خان کو ‘سلیکٹڈ وزیراعظم’ کہا جاتا رہا۔
تاہم گذشتہ روز ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی قاسم سوری نے رولنگ دیتے ہوئے لفظ ‘سلیکٹڈ’ پر پابندی عائد کردی تھی۔
صحافی کے سوال کا جواب دیتے ہوئے شریک چیئرمین پیپلز پارٹی کا کہنا تھا کہ لفظ سلیکٹڈ پر لگی پابندی پر اراکین اسمبلی سے بات کریں گے جبکہ اس پر مشاورت بھی کریں گے کیا اس لفظ پر پابندی لگ سکتی ہے یا نہیں۔
صحافی نے سوال کیا کہ گذشتہ روز چیئرمین سینیٹ آپ کے پاس آئے تھے کیا آپ نے ان کو مشورہ دیا جس پر سابق صدر نے مسکراتے ہوئے کہا کہ ‘میں نے ان سے کہا کہ آپ پر پابندی لگادیں’۔

عمران خان سلیکٹڈ نہیں تو پھر لفظ پر پابندی کیوں؟ شیری رحمٰن

ادھر پاکستان پیپلز پارٹی کی سینیٹر اور سینئر رہنما شیری رحمٰن نے بھی سلیکٹڈ لفظ پر پابندی کے حوالے سے کہا کہ عمران خان اگر سلیکٹڈ نہیں ہیں تو اس لفظ پر پابندی کیوں لگوارہے ہیں؟ان کا کہنا تھا کہ چیئرمین پی پی پی بلاول بھٹو زرداری کی زبان سے ادا ہونے والا سلیکٹڈ کا لفظ عمران خان کی پہچان بن گیا۔انہوں نے کہا کہ عمران خان نے سلیکٹڈ کے لفظ پر کل تالیاں بجائی تھیں اور آج قومی اسمبلی میں پابندی لگوادی، یہ پابندی لگوانا دراصل وزیراعظم کے دل کا چور ہے۔شیری رحمٰن کا یہ بھی کہنا تھا کہ اپنے حریفوں کو ‘چور’ اور ‘ڈاکو’ کہنے والے عمران خان کو لفظ ‘سلیکٹڈ’ کا خوف ایک مضحکہ خیز بات ہے۔پی پی پی سینیٹر کا کہنا تھا کہ بلاول بھٹو زرداری نے سلیکٹڈ کے ایک لفظ میں عمران خان کی پوری سیاست کو ہی سمودیا ہے۔انہوں نے عمران خان کے طرز حکمرانی پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ اگر عمران خان کو سلیکٹ (منتخب) کرنے والوں نے انہیں پہلے میانوالی کا کونسلر بنوادیا ہوتا تو آج ملک کی یہ حالت نہ ہوتی۔اپنی بات کو جاری رکھتے ہوئے انہوں نے کہا کہ جس شخص کی کونسلر کی سیٹ جیتنے کی اہلیت نہ ہو اور وہ وزیراعظم سلیکٹ ہوجائے تو ملک تو تباہ حال ہی ہوگا۔

وزیراعظم کی انا کے باعث قومی اسمبلی میں لفظ ’سلیکٹڈ‘ پر پابندی لگائی گئی، بلاول

پاکستان پیپلز پارٹی کے چیرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ وزیراعظم کی انا کے باعث قومی اسمبلی میں لفظ ’سلیکٹڈ‘ پر پابندی لگائی گئی۔قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ وزرا کے غیر سنجیدہ رویے پر قوم سے معافی مانگتا ہوں۔ بلاول بھٹو زرداری نے قومی اسمبلی میں لفظ سلیکٹڈ پر پابندی پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ایک سال پہلے میری تقریر میں جس لفظ پر وزیراعظم نے ڈیسک بجائے آج وہی لفظ ممنوع قرار دے دیا گیا ہے، ملک میں عوام، صحافت اور سیاست کچھ بھی آزاد نہیں، سلیکٹڈ کوئی غیر پارلیمانی لفظ نہیں لیکن وزیراعظم کی انا کی وجہ سے یہ پابندی لگائی گئی اور تاریخی سنسر شپ کی جارہی ہے، یہ کیسی آزادی ہےکہ ممبران اسمبلی کےالفاظ حذف کیےجاتےہیں، نیا پاکستان سنسرڈ پاکستان ہے جو نامنظور ہے، حکومت آگ پر مزید تیل چھڑک رہی ہے، اپوزیشن کی آواز کو دبانے سے غصہ کہیں اور نکلے گا۔

مریم اورنگزیب نے پابندی کے باوجود قومی اسمبلی میں وزیراعظم کو سلیکٹڈ کہہ دیا

مسلم لیگ (ن) کی سیکرٹری اطلاعات مریم اورنگزیب نے قومی اسمبلی میں پابندی کے باوجود وزیراعظم عمران خان کو سلیکٹڈ کہہ دیا۔ن لیگ کی سیکرٹری اطلاعات مریم اورنگزیب نے قومی اسمبلی میں بجٹ تقریر کرتے ہوئے کہا کہ آج پورا پاکستان سلگ رہا ہے، نالائق اور ناہل حکومت نے عوام سے نوالہ چھین لیا ہے، ناکام حکومت کا سلیکٹڈ وزیراعظم دھمکیوں پر اتر آیا ہے۔مریم اورنگزیب کی جانب سے وزیراعظم کو سلیکٹڈ کہنے پر ڈپٹی اسپیکر قاسم سوری نے کہا کہ میں نے کل لفظ سلیکٹڈ پر پابندی لگادی تھی، یہاں سب منتخب ہوکرآئے ہیں، اپنی اورایوان کی تذلیل نہ کرائیں۔مریم اورنگزیب نے کہا کہ ہینڈ پکڈ (ذاتی مفاد کیلئے چنا گیا) وزیراعظم بھی فیل ہے، ملک میں نیب فیل ہے ایف آئی اے فیل اور اب نیب ٹو بھی فیل ہوگا۔

وزیراعظم لفظ ’سلیکٹڈ‘لفظ نہیں سننا چاہتے کانوں میں روئی ڈال لیں، حمزہ شہباز

پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر حمزہ شہباز نے وزیراعظم کو مخاطب ہو کر کہا ہے کہ آپ ’سلیکٹڈ‘ ہیں تو چھاپ لگ چکی، لفظ نہیں سننا چاہتے کانوں میں روئی ڈال لیں۔لاہورمیں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے حمزہ شہباز نے شریف فیملی میں اختلافات کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ اختلاف کی باتیں قصہ پارینہ ہیں،حمزہ شہباز شریف نے کہا کہ عوام ’جھوٹے خان‘ کو بے نقاب کرکے احتساب کرے گی، نیازی صاحب کانوں میں روئی ڈالنے کا بندوبست کریں، اگر آپ ’سلیکٹڈ‘ ہیں تو اس کی چھاپ لگ چکی ہے۔

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے