سرفراز کو کپتانی سے ہٹاکر زیادتی کی گئی،معاملہ قائمہ کمیٹی میں اٹھائیں گے، فیصل جاوید

ٹیم کے وسیع تر مفاد میں سرفراز کو کپتانی سے ہٹایا گیا،چیئرمین پی سی

ویب ڈیسک : 18اکتوبر2019
اسلام آباد،لاہور: سینیٹ میں قائمہ کمیٹی برائے بین الصوبائی رابطہ کے رکن فیصل جاوید نے کرکٹ میں تبدیلیوں پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ بابر اعظم کو کپتان بنا کر زیادتی کی گئی اور وہ یہ معاملہ کمیٹی میں اٹھائیں گے۔
نجی ٹی وی کی خصوصی نشریات میں بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ نئے کپتان پر بہت زیادہ دبائو ہوگا، بابراعظم پر بھی دباوَ ڈال کر کارکردگی خراب کی جائے گی وہ اچھے کھلاڑی ہیں لیکن ان کی کارکردگی بھی متاثر ہوگی۔
ان کا کہنا تھا کہ سرفرازاحمد کو ٹی20 کی کپتانی سے ہٹانے کی کوئی وجہ نہیں ان کی کارکردگی شاندار ہے، بطور کپتان ٹی 20 جیت کی شرح زیادہ ہے۔سینیٹرفیصل جاوید کا کہنا تھا کہ سرفرازاحمد نے ٹی 20 میں مسلسل 11میچ جتوائے اور قومی ٹیم کو نمبر ون بنایا۔ان کا کہنا تھا کہ ہوم گراوَنڈ میں کھیلنے کے لیے پوری قومی ٹیم تبدیل کی گئی لہذا سارا ملبہ سرفرازاحمد پر نہیں ڈالا جاسکتا۔فیصل جاوید نے کہا کہ ٹی 20 میں سرفرازاحمد کا ریکارڈ بہت اچھا ہے، ٹی 20 کےکوچنگ اسٹاف کو تبدیل کرنا چاہیے۔ان کا کہنا تھا کہ مصباح الحق کے آنے کے بعد پہلی سیریز میں شکست ہوئی اور شاید توجہ ہٹانے کے لیے سرفراز احمد کو تبدیل کیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ شعیب ملک ٹاپ20 کھلاڑیوں میں شامل ہیں اور انہیں بھی ٹی 20سےہٹا دیا گیا ہے۔
خیال رہے کہ سرفراز احمد کو 2016 میں ٹی ٹوئنٹی فارمیٹ کی کپتانی سونپی گئی اور آج انہیں ہٹا دیا گیا ہے۔سرفراز کی قیادت میں پاکستانی ٹیم نے 37 میچ کھیلے اور 29 میچوں میں جیت حاصل ہوئی اور ان کی قیادت میں پاکستان ٹی20 فارمیٹ کی نمبر ون بنا۔

ٹیم کے وسیع تر مفاد میں سرفراز کو کپتانی سے ہٹایا گیا،چیئرمین پی سی بی

ادھرپاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے چیئرمین احسان مانی نے کہا ہے کہ سرفراز کی موجودہ فارم اور اعتماد سب کے سامنے تھا، اس لئے ٹیم کے وسیع تر مفاد کو دیکھتے ہوئے انہیں کپتانی سے ہٹانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ذرائع کے مطابق ان کا کہنا تھا کہ سرفراز کو موقع دیا جائے گا کہ وہ اپنا کھویا ہوا اعتماد بحال کریں اور دوبارہ بین الاقوامی کرکٹ میں اپنی فارم دکھا سکیں۔واضح رہے پاک آسٹریلیا ٹی ٹوئنٹی سیریز سے قبل سرفراز احمد سے قومی ٹیسٹ اور ٹی ٹوئنٹی کی کپتانی واپس لئے لی گئی۔‏پی سی بی کی جانب سے جاری کردہ پریس ریلیز کے مطابق اظہرعلی کو قومی ٹیسٹ کرکٹ ٹیم کا کپتان مقرر کردیا گیا ہے، وہ آسٹریلیا کے خلاف 2 ٹیسٹ میچز میں ٹیم کی قیادت کریں گے۔جبکہ بابراعظم کو قومی ٹی ٹوئنٹی کرکٹ ٹیم کا کپتان بنا دیا گیا، وہ آسٹریلیا کے خلاف 3 ٹی ٹونٹی میچز میں ٹیم کی قیادت کریں گے۔پی سی بی کے مطابق سرفرازاحمد کو دونوں فارمیٹ میں ناقص کارکردگی کی بنیاد پر کپتانی سے ہٹایا گیا۔‏آسٹریلیا کے خلاف ٹیسٹ اور ٹی ٹوئنٹی اسکواڈز کا اعلان 21 اکتوبر کو کیا جائے گا۔‏اظہر علی کو ٹیسٹ چیمپئین شپ کے سیزن 2019-20 کے لیے کپتان مقرر کیا گیا ہے جبکہ ‏بابر اعظم کو آسٹریلیا میں ہونے والے ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ 2020 تک کپتان مقرر کیا گیا ہے

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے