یوم پاکستان کی پریڈ جاری،دفاعی اور فوجی طاقت کا بھرپورمظاہرہ

اسلام آباد(نیوزمانیٹرنگ ڈیسک)اسلام آباد میں یوم پاکستان کی مناسبت سے مسلح افواج کی مشترکہ پریڈ کی تقریب شکر پڑیاں گراؤنڈ میں جاری ہے، تقریب میں ملٹری بینڈز نے ملی نغموں کی دھنیں پیش کیں۔سبز ہلالی پرچم اٹھائے دستوں کی پریڈ ایونیو میں آمد جاری ہے، تقریب میں تمام صوبوں کی جھلک نمایاں ہے۔ پریڈ کی تھیم ’ایک قوم اور ایک منزل‘ مختلف رنگوں میں نظر آیا۔آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ، چیئرمین جوائنٹ چیف آف اسٹاف کمیٹی جنرل ندیم رضا سمیت وزیر دفاع پرویز خٹک یوم پاکستان کی پریڈ میں شریک ہوئے۔
تقریب کے مہمان خصوصی صدر عارف علوی تھے جبکہ وزیراعظم عمران خان کورونا میں مبتلا ہونے کی وجہ سے پریڈ میں شرکت نہیں کی۔
پریڈ گراؤنڈ کے اندر جانے اور وہاں سے باہر جانے پر پابندی رہی، پریڈ دیکھنے والے تمام افراد کو فیس ماسک فراہم کیے گئے، درجہ حرارت کی جانچ کے لیے ٹمپریچر گنز استعمال کی گئیں، داخلی دروازوں پر ہینڈ سینیائٹرز فراہم کیے گئے، سماجی دوری کویقینی بنایا گیا، پریڈ کے مختلف سیگمنٹس کو ظاہر کرنے کے لیے ڈیجیٹل اسکرینیں لگائی گئیں۔پریڈ میں ترک فوجی بینڈ، بحرین، فلسطین، عراق، سری لنکا اور ترکی کے پیراٹروپرز نے خصوصی شرکت کی، کمانڈر بحرین نیشنل گارڈ جنرل شیخ عیسیٰ بن خلیفہ نے پریڈ کا معائنہ کیا۔کمانڈر یو کےاسٹریٹجک کمانڈ سرپیٹرک سینڈرز نے بھی پریڈ کا معائنہ کیا، چیف آف ڈیفنس اینڈ کمانڈر سری لنکن آرمی نے بھی پریڈ کا معائنہ کیا۔پریڈ کے اسکرپٹ کا آغاز تحریک پاکستان سے ہوا، قیام پاکستان کے لیے قربانیاں دینے والوں کو خراج تحسین پیش کیا گیا، ہنگو کے اعتزاز حسن کی طرح دہشتگردی کےخلاف جنگ میں جان کی قربانی دینے والوں کو خراج عقیدت پیش کیا گیا۔تقریب میں مقبوضہ کشمیرکی کم سن پیلٹ گن متاثرین حبا نثار اور آصفہ بانو کو خراج تحسین پیش کیا گیا، نواب سراج رئیسانی، ہارون بلور اور شجاع خانزادہ کو ہمت وعزم کی علامت کےطور پر خراج تحسین پیش کیا گیا۔پریڈ کا اہم حصہ پرائیڈ آف پاکستان انکلوژر تھا، انکلوژر میں ایسے افراد شامل تھے جنہوں نے اپنے شعبوں میں عمدہ کارکردگی کا مظاہرہ کیا، مختلف فلوٹس پر پاکستان کے تشخص کی احسن انداز میں عکاسی کی گئی۔ پریڈ میں ڈھول پارٹی نے مختلف دھنوں سے تمام علاقوں کی نمائندگی کی،خواتین ڈھولچی ڈھول پارٹی کا اہم حصہ تھیں۔پریڈ کے مہمان خصوصی صدر مملکت عارف علوی نے خطاب میں کہا کہ پاکستان خطے میں امن چاہتا ہے، امن کی خواہش کو کمزوری نہ سمجھا جائے، جارحیت کا بھرپور انداز میں جواب دیا جائے گا۔ اپنی آزادی کا ہر قیمت پر دفاع کریں گے۔یوم پاکستان پریڈ سے خطاب میں یہ بھی کہا کہ بھارت مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی دھجیاں اڑا رہا ہے۔ جنوبی ایشیا میں پائیدار امن کے لیے مسئلہ کشمیر کا حل ہونا ضروری ہے۔انہوں نے کہا کہ او آئی سی جیسے فورم کو مضبوط کرنے کی ضرورت ہے۔ دنیا افغانستان میں امن کےلیے پاکستان کی کوششوں کی معترف ہے۔ کورونا وبا پر جلد قابو پالیں گے۔ ہمیں زندہ قوم ہونے کا ثبوت دیتے ہوئے آگے بڑھنا ہوگا۔پریڈ میں دفاعی اور فوجی طاقت کا بھرپورمظاہرہ کیا جارہا ہے، سول ، فوجی قیادت اور غیر ملکی شخصیات بڑی تعداد میں شریک ہیں۔تقریب میں سندھ، پنجاب، بلوچستان ،خیبرپختونخوا، گلگت بلتستان اور آزاد کشمیر کے وفود نے شرکت کی، پریڈ میں قوم کا نام روشن کرنیوالوں کیلئے خصوصی پیغامات دیے گئے۔
وفاقی دارالحکومت میں آج موبائل اور انٹرنیٹ سروسز معطل رہیں گی جبکہ پریڈ گراؤنڈ کی طرف آنیوالے راستے بند بھی بند کردیے گئے تھے۔
پریڈ کی خاص بات یہ ہے کہ اس میں پاکستان کے جدید ترین دفاعی نظام کی نمائش ہوئی جبکہ ائیر چیف مارشل ظہیر احمد بابر پاکستان ائیر فورس کے لڑاکا طیاروں کی فلائی پاسٹ کی قیادت کی۔ لیڈیز دستے میں پولیس، رینجرز، اے این ایف اور اے ایس ایف خواتین افسران شامل رہیں۔واضح رہے کہ وفاقی دارالحکومت میں خراب موسم کی باعث 23 مارچ کو یومِ پاکستان کی پریڈ کو ملتوی کرکے 25 مارچ کو ری شیڈول کیا گیا تھا۔

Show More

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے